رسائی کے لنکس

نئے بلدیاتی نظام کے خلاف ہڑتال موخر کرنے کی اپیل

  • کراچی

فائل

فائل

جمعرات کی ہڑتال ناکام بنانے کیلئے پیپلزپارٹی روٹھے اتحادیوں کو مناتی رہی اور قوم پرست جماعتیں ہڑتال کی کامیابی کیلئے حکمت عملی میں مصروف رہیں

مسلم لیگ ن تحریک انصاف اور اے این پی کے سربراہان سمیت مسلم لیگ ہم خیال کے رہنما ارباب غلام رحیم نے جمعرات کو سندھ میں ہڑتال موخر کرنے کی اپیل کر دی ہے۔

دوسری جانب جمعرات کی ہڑتال ناکام بنانے کیلئے پیپلزپارٹی روٹھے اتحادیوں کو مناتی رہی اور قوم پرست جماعتیں ہڑتال کی کامیابی کیلئے حکمت عملی میں مصروف رہیں۔

مرکز میں اپوزیشن جماعت کے سربراہ میاں محمد نواز شریف نے سندھ کے قوم پرستوں سے اپیل کی ہے کہ وہ کراچی میں ہونے والے سانحہ کے باعث جمعرات کی ہڑتال موخر کر دے ۔انہوں نے فیکٹری میں پیش آنے والے المناک حادثے پر بھی شدید رنج و غم کا اظہار کیا اور کارکنان کو ہدایت کہ جمعرات کو یوم سوگ منایا جائے۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے بھی اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ سانحہ بلدیہ ٹاؤن میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں ۔ سانحہ کراچی کے پیش نظر کل کی ہڑتال موخر کی جائے ۔

دوسری جانب اتحادی جماعت اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی نے بلدیہ ٹاؤن میں فیکٹری آتشزدگی کے واقعہ کو قومی سانحہ قرار دیا اور اپیل کی کہ جمعرات کو یوم سوگ منایا جائے، ہڑتال نہ کی جائے ۔ ادھر مسلم لیگ ہم خیال کے رہنما ارباب غلام رحیم نے بھی کل کی ہڑتال موخر کرنے کی اپیل کی ہے ۔

بدھ کو پورا دن پیپلزپارٹی کی قیادت جہاں آتشزدگی پر نظر رکھے ہوئے تھی وہیں روٹھے اتحادیوں کا کام بھی جاری رہا۔ سندھ میں پیپلزپارٹی کے سینئر وزیر سے بات نہ بنی تو مرکزی رہنما آغا سراج درانی میدان میں آ گئے۔ انہوں نے ناراض مسلم لیگ فنکشنل کے سربراہ پیر پگارا سے ملاقات کی اور نئے بلدیاتی نظام پر ان کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی اور کوشش کرتے رہے۔

آغا سراج درانی نے پیر پگارا کو بتایا کہ وہ صدر زرداری کی خصوصی ہدایت پر اتحادیوں سے رابطے کر رہے ہیں ۔ آغا سراج درانی کا کہنا تھا کہ پیر پگارا بزرگ ہیں اور کوشش کی جا رہی ہے کہ بلدیاتی نظام پر ان کے تحفظات دور کیے جائیں۔ دوسری جانب اس ملاقات کے مثبت اثرات دیکھنے میں نہیں آئے اور مسلم لیگ فنکشنل جمعرات کو قوم پرستوں کی جانب سے ہڑتال کی بدستور حمایت کر رہی ہے۔ ترجمان بلاول ہاؤس نے کہا کہ جمعرات کو ہڑتال کے بجائے یوم سوگ منایا جائے۔

دوسری جانب پیپلزپارٹی کی اتحادیوں کی کوششوں کو دیکھتے ہوئے قوم پرستوں کی سرگرمیاں بھی عروج پر پہنچ گئیں۔ عوامی تحریک کے صدر ایاز لطیف پلیجو نے ہڑتال کی کامیابی کیلئے سندھ یونائٹیڈ پارٹی کے رہنما شاہ جلال محمود ، سندھ ترقی پرست پارٹی کے رہنما قادر مگسی ، جئے سندھ قوم محاذ کے رہنما نیاز کالانی اور ڈاکٹر صفدر سرکی سے رابطہ کیا اور ہڑتال کی حکمت عملی پر بات چیت کی۔ عوامی تحریک کے ترجمان نور احمد کے مطابق کراچی ، میر پور خاص ، نوابشاہ ، سکھر اور حیدرآباد میں ہڑتال کی کامیابی کیلئے خاص حکمت عملی طے کی گئی ہے ۔

حیدر منزل کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے قوم پرست جماعت سندھ یونائیٹڈ کے سربراہ جلال محمود شاہ نے کہا کہ جمعرات کو ہر صورت سندھ میں ہڑتال ہو گی ۔سندھ میں جن جماعتوں نے اپوزیشن بینچوں پر بیٹھنے کا اعلان کیا ہے ان کے شکر گزار ہیں ۔جلال محمود شاہ کا کہنا تھا کہ تیرہ ستمبر کو بلدیاتی آرڈینس کے خلاف ہڑتال بھی ہو گی اور سانحہ بلدیہ ٹاؤن پر یوم سوگ بھی منایا جائے گا۔

یاد رہے کہ سندھ میں نئے بلدیاتی آڑڈینس ”پیپلزآرڈیننس 2012ء “ کے خلاف جمعرات کو قوم پرست جماعتوں نے ہڑتال کا اعلان کر رکھا ہے ۔حکمران اتحاد میں شامل اے این پی، مسلم لیگ فنکشنل، اوراین پی پی کے علاوہ مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف نے بھی اس ہڑتال کی حمایت کا اعلان کررکھا تھا۔
XS
SM
MD
LG