رسائی کے لنکس

مالی میں امن فوج کی تعیناتی کی منظوری کا امکان

  • واشنگٹن

مالی کے نوجوان القاعدہ سے مقابلے کی تریبت حاصل کررہے ہیں(فائل)

مالی کے نوجوان القاعدہ سے مقابلے کی تریبت حاصل کررہے ہیں(فائل)

قرارداد میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بن کی مون سے مغربی افریقی بلاک ای سی او ڈبلیو اے ایس کو فوجی معاونت اور سیکیورٹی کے ماہرین فراہم کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔

توقع ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل شورش زدہ ملک مالی میں امن وامان کی بحالی کے لیے غیر ملکی فوجی دستے تعینات کرنے کی اجازت دے دے گی۔

اقوام متحدہ کے لیے فرانسیسی مشن کی جانب سے ٹویٹرپر بھیجنے جانے والے ایک پیغام میں کہا گیاہے کہ سلامتی کونسل نیویارک کے وقت کے مطابق جمعے کی سہ پہر قرارداد کی منظوری دے دے گی۔

مالی کی عبوری حکومت نے اسلامی عسکریت پسندوں کو نکال باہر کرنے کے لیے، جنہوں نے اس سال کے شروع میں فوجی بغاوت کے بعد ملک کے شمالی حصے پر قبضہ کرلیاتھا، غیر ملکی فوجی دستے بھیجنے کی اپیل کی تھی۔

قرارداد میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بن کی مون سے مغربی افریقی بلاک ای سی او ڈبلیو اے ایس کو فوجی معاونت اور سیکیورٹی کے ماہرین فراہم کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔

قرارداد میں مسٹر بن کی مون سے یہ بھی کہاگیا ہے کہ وہ 45 دنوں میں اس بارے میں تفصیلی رپورٹ دیں کہ مالی بھیجنے کے لیے فوج کی تشکیل کیسے ہوگی ، اسے کس طرح تعینات کیا جائے گا اورا س کے لیے وسائل کہاں سے مہیا ہوں گے۔

اس کے بعد سلامتی کونسل ایک اور قرارداد کے ذریعے اس منصوبے کی منظوری دے گی۔

جمعے کی قرارداد میں اقوام متحدہ کے اس مطالبے کا ایک بار پھر اعادہ کیا گیا ہے کہ مالی کے عسکریت پسند ، القاعدہ کے اسلامک المغرب گروپ سے اپنا تعلق ختم کریں اور دوسرے تمام گروپ انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ختم کریں۔
XS
SM
MD
LG