رسائی کے لنکس

افغان وزیر دفاع نے استعفی دے دیا

  • واشنگٹن

افغانستان کے وزیر دفاع، جنرل عبدالرحیم وردک

افغانستان کے وزیر دفاع، جنرل عبدالرحیم وردک

افغانستان کے وزیر دفاع، جنرل عبدالرحیم وردک اور وزیر داخلہ، بسم اللہ محمدی، پر الزام ہے کہ وہ ملک کی سلامتی اور اعلیٰ عہدے داروں کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام رہے ہیں

افغانستان کے وزیر دفاع پارلیمنٹ میں اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے میں ناکامی کے بعد اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں۔

جنرل عبدالرحیم وردک نے منگل کے روز کابل میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ وہ ایوان زیریں کے فیصلے کے احترام میں اپنا عہدہ چھوڑ رہے ہیں۔

افغان قانون سازوں نے شورش پسندوں کے سلسلے وار حملوں اور سرحد پار سے گولہ باری کے واقعات کے بعد، جس کا الزام پاکستان پرلگایا گیا تھا، ہفتے کے روز وردک اور وزیر داخلہ بسم اللہ محمدی کی برطرفی کے حق میں ووٹ دیا تھا ۔

ان دونوں وزراء پر الزام تھا کہ وہ ملک کی سلامتی اور اعلیٰ عہدے داروں کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

افغانستان کے وزیر داخلہ، بسم اللہ محمدی

افغانستان کے وزیر داخلہ، بسم اللہ محمدی


پارلیمنٹ میں ان دونوں وزراء پر عدم اعتماد کے ووٹ کے بعد صدر حامد کرزئی نے کہاتھا کہ وردک اور محمدی اپنے جانشینوں کےتقرر تک اپنے عہدوں پر موجود رہیں گے۔

صدارتی دفتر نے فوری طور پر یہ نہیں بتایا کہ مسٹر کرزئی وردک کا استعفیٰ منظور کریں گے یا نہیں۔

کابینہ کے دو نمایاں وزیروں کی برطرفی ایک ایسے وقت میں ہورہی ہے جب نیٹو کے لڑاکا فوجی دستے افغانستان سے واپسی کی تیاری کررہے ہیں اور 2014ء تک سیکیورٹی کی ذمہ داریوں کی منتقلی کاکام مکمل کرنا چاہتے ہیں۔
XS
SM
MD
LG