رسائی کے لنکس

امریکی تنقید کے باجود افغانستان نے 65 قیدی رہا کر دیے


رہا کیے جانے والوں میں محمد ولی بھی شامل ہے جس کے بارے میں امریکہ کا دعویٰ ہے کہ وہ طالبان کا ساتھی اور دھماکوں کا ماہر ہے جس نے امریکی اور افغان فورسز کو نشانہ بنایا۔

افغانستان نے امریکہ کی تنقید کے باوجود اپنے ہاں عسکریت پسندی کے الزام میں قید 65 افراد کو رہا کر دیا ہے۔

افغان حکام کے مطابق قیدیوں کو جمعرات کی صبح پروان صوبے میں سابق امریکی حراستی مرکز سے رہا کیا گیا۔

رہا کیے جانے والوں میں محمد ولی بھی شامل ہے جس کے بارے میں امریکہ کا دعویٰ ہے کہ وہ طالبان کا ساتھی اور دھماکوں کا ماہر ہے جس نے امریکی اور افغان فورسز کو نشانہ بنایا۔

کئی ہفتے قبل افغان صدر حامد کرزئی نے اعلان کیا تھا کہ حکومت نے ان قیدیوں کے مقدمات کا از سر نو جائزہ لینے کے بعد انھیں رہائی کے قابل قرار دیا ہے۔ اس اعلان پر امریکہ نے احتجاج کیا تھا۔

مسٹر کرزئی کا کہنا تھا کہ اس حراستی مرکز میں حالات ان قیدیوں کو اپنے ہم وطنوں کے خلاف اور طالبان کے لیے وفادار بنانے میں کارگر ثابت ہو رہے تھے۔

امریکہ چاہتا تھا کہ ان قیدیوں پر افغان عدالتوں میں مقدمات چلائے جائیں۔
XS
SM
MD
LG