رسائی کے لنکس

قندھار میں چار خود کش حملے: 30 افراد ہلاک


قندھار میں چار خود کش حملے: 30 افراد ہلاک

قندھار میں چار خود کش حملے: 30 افراد ہلاک

افغان صدر حامد کرزئی کے بھائی نے کہا ہے کہ جنوبی افغان شہر قندھار میں چار خود کش حملہ آوروں نے دھماکے کر کے کم از کم 30 افراد کو ہلاک کر دیا ہے۔

احمد ولی کرزئی قندھار کی صوبائی کونسل کے سربراہ ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ ہفتے کے روز ہونے والے ان حملوں کا اصل نشانہ ایک جیل تھی جس پر 2008ء میں بھی حملہ کیا گیا تھا۔ انھوں نے کہا ایک دھماکا ان کے گھر کے قریب ہوا۔

حکام نے کہا ہے کہ ان دھماکوں میں پولیس اہل کار بھی مارے گئے ہیں۔ طبی حکام کی اطلاع کے مطابق 50 کے لگ بھگ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

ایک اور واقعے میں صدر حامد کرزئی نے اس بات کا امکان ظاہر کیا ہے کہ ممکن ہے وہ آئندہ انتخابات کی نگرانی کے لیے مقرر کیے جانے والے کمیشن میں غیر ملکیوں کو بھی تعینات کریں۔

صدارتی ترجمان وحید عمر نے ہفتے کے روز کہا کہ افغان حکومت الیکشن شکایات کمیشن میں دو غیر افغانیوں کو تعینات کرنے پر آمادہ ہے۔ تاہم ترجمان نے کہا کہ یہ استثنائی صورتِ حال ہے کیوں کہ صدر کرزئی انتخابی عمل کی ’افغانائزیشن‘ کرنا چاہتے ہیں۔

XS
SM
MD
LG