رسائی کے لنکس

افغان جنگ کو محدود کرنے کا مشورہ


افغان جنگ کو محدود کرنے کا مشورہ

افغان جنگ کو محدود کرنے کا مشورہ

واشنگٹن میں قائم ایک غیر جانبدار تحقیقی ادارے، کونسل آن فارن ریلیشنز، نے صدر براک اوباما پر زور دیا ہے کہ اگر افغانستان میں پیش رفت کے کوئی آثار نہیں تو وہ امریکی فوج کے مشن کو محدود کردیں۔

جمعہ کو جاری ہونے والی ایک رپورٹ میں ادارے نے صدر اوباما کے گزشتہ سال کے اُس فیصلے کی حمایت کی ہے جس میں افغانستان میں طالبان اور القاعدہ کے خلاف جنگ میں شریک امریکی فوجوں کی تعداد بڑھا کر ایک لاکھ کرنے کے علاوہ افغان سکیورٹی فورسز کو تربیت دینا شامل ہے۔

اوباما انتظامیہ آئندہ ماہ افغان جنگی حکمت عملی کا تفصیلی جائزہ لے گی۔ کونسل آن فارن ریلیشنز کی ٹاسک فورس نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ اگر افغانستان میں پیش رفت ہو رہی ہے تو امریکی انتظامیہ کو جولائی 2011ء کے اوائل سے فوجوں کے انخلا کے اپنے فیصلے پرعملدرآمد کرنا چاہیے۔

اس کے علاوہ صدر اوباما پر زور دیا گیا ہے کہ وہ فوجی مشن پر آنے والی لاگت پر بھی غور کریں کیونکہ اس سے یہ اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ افغانستان میں کی جانے والی کوششیں کامیاب ہو رہی ہیں یا نہیں۔

امریکی انتظامیہ نے حالیہ دنوں میں یہ اشارہ دینا شروع کیا ہے کہ وہ آئندہ جولائی میں فوجوں کے انخلا کے فیصلے سے پیچھے ہٹ رہی ہے اور اس کی بجائے اُس نے اس بات پر زور دینا شروع کر دیا ہے کہ اُس کا ہدف 2014ء تک سکیورٹی کی ذمہ داریاں افغانوں کو منتقل کرنا ہے ۔

XS
SM
MD
LG