رسائی کے لنکس

افغانستان: پر تشدد حملوں میں دو اعلٰی عہدیدار ہلاک


پولیس سربراہ محمد موسیٰ رسولی پیر کی صبح اپنے گھر سے صوبہ ہرات جا رہے تھے کہ سڑک کنارے نصب بم سے ان کی گاڑی ٹکرا گئی۔

افغانستان میں پیر کو تشدد کے دو مختلف واقعات میں ایک صوبائی پولیس چیف اور خواتین کے معاملات سے متعلق شعبے کی سربراہ ہلاک ہو گئیں۔

حکام کے مطابق صوبہ نمروز کے پولیس سربراہ محمد موسیٰ رسولی پیر کی صبح اپنے گھر سے صوبہ ہرات جا رہے تھے کہ سڑک کنارے نصب بم سے ان کی گاڑی ٹکرائی جس سے وہ شدید زخمی ہو گئے انھیں فوراً اسپتال پہنچایا گیا لیکن وہ زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے۔
طالبان نے محمد موسیٰ رسولی پر حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

تشدد کا دوسرا واقعہ صوبہ لغمان میں پیش آیا جہاں صوبے میں عورتوں کے شعبے کی سربراہ نادیہ صدیقی کو نشانہ بنایا گیا۔

صوبائی حکومت کے ترجمان سرحدی زیوک کا کہنا ہے کہ نادیہ صدیقی کو اس وقت گولی کا نشانہ بنایا گیا جب وہ اپنے گھر سے دفتر جا رہی تھی۔ تاہم کسی نے اس کی ذمہ داری قبول نہیں کی اور پولیس واقعہ کی تحقیقات کر رہی ہے۔

افغانستان میں حالیہ مہینوں میں حکومتی عہدیداروں اور سکیورٹی فورسز پر طالبان شدت پسندوں کے حملوں میں تیزی دیکھنے میں آئی ہے۔ گذشتہ ہفتے افغان انٹیلی جنس کے سربراہ اسد اللہ خالد کو بھی ایک خود کش بمبار نے نشانہ بنایا تھا جس کی وجہ سے وہ شدید زخمی ہو گئے تھے۔
XS
SM
MD
LG