رسائی کے لنکس

اقوام متحدہ: امریکہ کا احمدی نژاد کی تقریر کا واک آؤٹ


امریکہ اور دوسرے مغربی وفود نے جمعرات کو اقوامِ متحدہ سے ایرانی صدر محمود احمدی نژاد کے خطاب کا اُس وقت واک آؤٹ کیا جب اُنھوں نے یہ کہا کہ دنیا بھر کے زیادہ تر لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ امریکی حکومت ہی11ستمبر2001ء کے دہشت گرد حملوں کی ذمے دار تھی۔

مسٹر احمدی نژاد نےاقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی میں عالمی رہنماؤں کو بتایا کہ زیادہ تر امریکی حکومت کے عہدے دار تھے جو یہ سمجھتے تھے کہ نیویارک ورلڈ ٹریڈ سینٹرکو زمین بوس کرنے اور پینٹگان پر ہونے والے خودکش ہائی جیکروں کےحملوں کےپیچھے ایک دہشت گرد گروپ ملوث تھا۔

انھوں نے کہا کہ دوسرا نظریہ یہ ہے کہ اِن حملوں کے پیچھے امریکی حکومت کے کچھ افراد ملوث تھے جِن کی ایما پر یہ حملے ہوئے تاکہ گِرتی ہوئی امریکی معیشت کو سہارا دیا جائے اور، اُن کے بقول، اسرائیل کی یہودی حکومت کو بچایا جائے۔

ایرانی صدر نے امریکہ کے مذہبی گروپوں کی طرف سے قرآن کو نذرِ آتش کرنے کی دھمکیوں پر بات کی، جسے اُنھوں نے بدی کا عمل قرار دیا۔ اُنھوں نے مسلمانوں کی مقدس کتاب اور بائیبل کی کاپیاں اٹھا رکھی تھیں جِن کے بارے میں اُن کا کہنا تھا کہ ایرانی لوگ دونوں مذہبی عقائد کا احترام کرتے ہیں۔
إِس سے قبل جمعرات کوہی اقوامِ متحدہ میں تقریر کرتے ہوئے امریکی صدر براک اوباما نےجوہری پروگرام پر ایران کومتنبہ کیا اور اسرائیل فلسطین امن معاہدے کی حمایت پر زور دیا۔

XS
SM
MD
LG