رسائی کے لنکس

ملبے کے ٹکڑے 'غالباً' لاپتا ملائشین طیارے کے ہیں: آسٹریلیا


جہاز کا ایک ٹکڑا

جہاز کا ایک ٹکڑا

ہوابازی کے محکمے کے حکام باور کرتے ہیں کہ دو سال قبل یہ جہاز بحر ہند پر پرواز کرتے ہوئے موزمبیق کے قریب گر کر تباہ ہو گیا تھا۔

آسٹریلیا کے حکام نے کہا ہے کہ موزمبیق کے ساحل کے قریب سے ملنے والے ملبے کے دو ٹکڑے "ممکنہ طور پر" دو سال قبل لاپتا ہونے والے ملائیشین بوئنگ طیارے کے ہی ہو سکتے ہیں۔

ان میں سے ایک تقریباً ایک میٹر لمبا دھات کا ٹکڑا ہے جو رواں ماہ کے اوائل میں ایک امریکی سیاح کو ساحل کی ریت پر سے ملا تھا جب کہ ایک ٹکڑا گزشتہ دسمبر میں جنوبی افریقہ کے ایک نوجوان کو ملا جو اپنے اہل خانہ کے ساتھ چھٹیاں منانے یہاں آیا ہوا تھا۔

آسٹریلیا کے وزیر ٹرانسپورٹ ڈیرن چیسٹر نے ایک بیان میں کہا کہ ان ٹکڑوں کے تجزیے سے پتا چلا ہے کہ یہ "غالباً" فلائیٹ 370 کا حصہ ہیں جو آٹھ مارچ 2014ء کو کوالالمپور سے بیجنگ جاتے ہوئے لاپتا ہوگئی تھی۔ اس پر عملے سمیت 239 افراد سوار تھے۔

ہوابازی کے محکمے کے حکام باور کرتے ہیں کہ یہ جہاز بحر ہند پر پرواز کرتے ہوئے موزمبیق کے قریب گر کر تباہ ہو گیا تھا۔

اس کی تلاش کے لیے کی جانے والی سرگرمیوں میں کارکنوں نے تقریباً ایک لاکھ مربع کلومیٹر علاقے کو چھان مارا تھا۔

گزشتہ جولائی میں اس طیارے کے پر کا ایک حصہ بحرہند میں فرانسیسی جزائر سے ملا تھا۔

حکام حال ہی میں جنوبی افریقہ کے ساحل سے ملنے والے ملبے کے ایک اور حصے کا بھی تجزیہ کر رہے ہیں۔

XS
SM
MD
LG