رسائی کے لنکس

طیارے کی تلاش کے لیے وقت کی قید نہیں: ٹونی ایبٹ


آسٹریلوی وزیراعظم ٹونی ایبٹ (فائل فوٹو)

آسٹریلوی وزیراعظم ٹونی ایبٹ (فائل فوٹو)

آسٹریلیا کے وزیراعظم ٹونی ایبٹ کا کہنا تھا کہ طیارے کی تلاش تیز اور آپریشن کا دائرہ وسیع ہو رہا ہے نا کہ کم۔

آسٹریلیا کے وزیراعظم ٹونی ایبٹ کا کہنا ہے کہ ملائیشیا کے لاپتا مسافر طیارے کی تلاش کی کوششوں سے متعلق ’’وقت کی قید‘‘ مقرر نہیں کی گئی۔

رواں ماہ کے اوائل میں ملائیشیا کا ایک مسافر طیارہ بحر ہند پر پرواز کے دوران لاپتا ہو گیا تھا اور مجموعی طور پر 20 ہوائی جہاز اور کشتیوں نے پیر کو آسٹریلیا کے شہر پرتھ سے دو ہزار کلو میٹر مغرب سمندر میں دوبارہ تلاش شروع کی۔

ٹونی ایبٹ نے کہا کہ ’’میں یقینی طور پر اس (تلاش) سے متعلق وقت کی حد طے نہیں کر رہا۔ ہماری تلاش تیز اور آپریشن کا دائرہ وسیع ہو رہا ہے نا کہ کم۔‘‘

متاثرہ خاندانوں کی طرف سے ملائیشیا کی حکومت کو شدید نتقید کا نشانہ بنایا گیا کہ وہ تلاش اور تحقیق کے عمل کو درست انداز میں نہیں چلا رہی۔

اُدھر گمشدہ ملائیشین طیارے کے تلاش میں مدد کے لیے امریکہ نے بھی اپنا ایک بحری جہاز روانہ کیا ہے جو ’’بلیک باکس‘‘ کا پتا لگانے والے جدید آلات سے لیس ہے۔

’’اوشین شیلڈ‘‘ نامی جہاز کو اس مقام تک پہنچنے میں چند دن لگ سکتے ہیں جہاں حکام کے خیال میں بوئنگ 777 گر کر تباہ ہوا تھا۔

آٹھ مارچ کو کوالالمپور سے بیجنگ جانے والے مسافر جہاز پرواز کے ایک گھنٹے بعد لاپتا ہوگیا تھا۔ اس پر عملے سمیت 239 افراد سوار تھے۔ مسافروں میں اکثریت کا تعلق چین سے تھا۔

لاپتا طیارے کی تلاش کا کام اب چوتھے ہفتے میں داخل ہو چکا ہے۔
XS
SM
MD
LG