رسائی کے لنکس

ڈیرہ بگٹی: بم دھماکے میں رکنِ اسمبلی سمیت 15 افراد زخمی


فائل فوٹو

فائل فوٹو

رکن قومی اسمبلی احمدان بگٹی اپنے صاحبزادے اور ساتھیوں کے ہمراہ نماز جمعہ کے بعد مسجد سے باہر آرہے تھے جب مرکزی دروازے کے قریب نصب بم کا نشانہ بنے۔

بلوچستان کے شورش زدہ ڈیرہ بگٹی شہر میں جمعہ کو ایک مسجد کے احاطے میں ہونے والے بم دھماکے میں قومی اسمبلی کے ایک رکن سمیت پندرہ افراد زخمی ہو گئے۔

پولیس نے بتایا کہ رکن قومی اسمبلی احمدان بگٹی اپنے صاحبزادے اور ساتھیوں کے ہمراہ نماز جمعہ کے بعد جب مسجد سے باہر آ رہے تھے تو مرکزی دروازے کے قریب نصب بم میں ریموٹ کنٹرول سے دھماکا کر دیا گیا۔

ڈپٹی کمشنر سید فیصل شاہ نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ احمدان بگٹی اور چند دیگر افراد اس حملے میں شدید زخمی ہوئے۔

بظاہر اس حملے کا ہدف احمدان بگٹی تھے جن پر اس سے پہلے بھی ایک قاتلانہ حملہ ہو چکا ہے۔

ان کا شمار مرحوم نواب اکبر بگٹی کی جمہوری وطن پارٹی کے مخالفین میں ہوتا ہے اور وہ قومی اسمبلی میں مسلم لیگ (ق) کی نمائندگی کرتے ہیں جو مرکز اور صوبہ بلوچستان میں حکمران پیپلز پارٹی کی ایک اہم اتحادی جماعت ہے۔

اُدھر وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے جمعہ کو بلوچستان کے ساحلی شہر گوادر کے دورے کے دوران مختلف ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کیا۔

اس ضمن میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اُنھوں نے ترقیاتی منصوبوں اور صوبے کے مسائل کو حل کرنے کی سرکاری کوششوں پر تنقید کو یہ کہہ کر مسترد کیا کہ حکومت اپنے تیئں ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے۔

’’ہم سب کی پریشانیوں کا حل صرف اس بات میں ہے کہ ہم سب ملک کر پاکستان کے لیے کام کریں، پاکستان کے لیے سوچیں۔ میں ایک بار پھر کہتا ہوں کہ صوبہ بلوچستان پاکستان کا نہایت اہم ترین صوبہ ہے، اس سے پاکستان کا مستقبل وابستہ ہے۔‘‘

بلوچستان میں امن و امان کی خراب حالت پر سپریم کورٹ نے گزشتہ دنوں ایک فیصلے میں صوبائی اور وفاقی حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ اپنے شہریوں کے حقوق کا تحفظ کرنے میں ناکامی پر صوبائی حکومت حکمرانی کا اخلاقی اور آئینی جواز کھو چکی ہے۔

لیکن وفاقی حکام نے عدالت کے اس فیصلے سے اختلاف کرتے ہوئے جمعرات کو اس کے خلاف ایک آئینی درخواست جمع کرائی جس میں سپریم کورٹ پر واضح کیا گیا ہے کہ سیاسی حکومت کی کارکردگی کا جائزہ لینا عدلیہ کا کام نہیں۔

درخواست میں یہ موقف بھی اختیار کیا گیا ہے کہ بلوچستان کی حکومت کے بارے میں عدالت عظمٰی کا بارہ اکتوبر کا تنقیدی فیصلہ آئین کی اٹھاون دو بی شق کے اختیارات استعمال کرنے کے مترادف ہے جس کے تحت ماضی میں منتخب حکومتوں کا بوریا بستر لپیٹ کر انھیں گھر بھیج دیا گیا۔
XS
SM
MD
LG