رسائی کے لنکس

بان کی مون کا افغانستان میں اتحادی حکومت کے قیام پر زور


بان کی مون

بان کی مون

انھوں نے افغانستان کی موجودہ صورت حال کو اہم موڑ قرار دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان کے مسائل کو حل کرنے کے لیے ایک "حقیقی شراکت" کی ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے افغانستان کے دونو ں صدارتی امیدواروں عبداللہ عبداللہ اور اشرف غنی پر زور دیا ہے کہ وہ ایک قومی اتحادی حکومت کے قیام پر اتفاق کریں۔

بان کی مون نے بدھ کو جاری ہونے والے ایک بیان میں دونوں حریف امیدواروں سے اپیل کی ہے کہ وہ دو ماہ پہلے کیے گئے وعدے کے مطابق معاہدے پر اتفاق کریں۔

انھوں نے افغانستان کی موجودہ صورت حال کو اہم موڑ قرار دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان کے مسائل کو حل کرنے کے لیے ایک "حقیقی شراکت" کی ضرورت ہے۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری کی مصالحتی کوششوں سے 12 جولائی کو عبداللہ عبداللہ اور اشرف غنی نے اقوام متحدہ کی نگرانی میں 14 جون کو ہونے والے صدراتی انتخاب کے دوسرے مرحلے کے ووٹوں کی چھان بین اور حتمی نتائج کو قبول کرنے پر اتفاق کیا تھا۔

اس کے ساتھ ہی وہ ایک قومی اتحادی حکومت کے قیام پر بھی متفق ہو گئے تھے۔

رواں ہفتے کے اوائل میں عبداللہ عبداللہ نے اقوام متحدہ کی زیر نگرانی ووٹوں کی جانچ پڑتال کو مسترد کر دیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ ووٹوں کی چھان بین کا عمل "جعلی ووٹوں " کو صیح ووٹو ں سے الگ کرنے میں ناکام ہو گیا ہے اور بقول ان کے صیح ووٹوں سے سیاسی حل کی "راہ ہموار ہو سکتی" تھی۔

عبداللہ عبداللہ نے کہا کہ قومی حکومت کے قیام کے لیے اشرف غنی کے ساتھ ہونے والے مزاکرات میں بھی تعطل پیدا ہو گیا ہے۔

افغانستان میں اقوام متحدہ کی نگرانی میں ووٹوں کی چھان بین کا عمل پانچ ستمبر کو مکمل ہوا لیکن ان کے نتائج کا اعلان ہونا ابھی باقی ہے۔

XS
SM
MD
LG