رسائی کے لنکس

پیدائش کے سال سے موٹاپے کا براہ ِراست تعلق: تحقیق


امریکہ میں ہارورڈ میڈیکل اسکول اور میساچوسسٹس جنرل ہاسپٹل نے موٹاپے کے حوالے سے موروثیت اور موٹاپے کے تعلق کے بارے میں ایک تحقیق کی۔ اس تحقیق میں کئی دہائیوں تک دس ہزار سے زائد افراد کا ڈیٹا اکٹھا کیا گیا اور اس کا تقابلی جائزہ لیا گیا۔

ایک نئی تحقیق کے مطابق 1942ء کے بعد پیدا ہونے والے افراد میں موجود ایک جین (کروموسوم پر موجود وراثتی خصوصیات کو اگلی نسل تک منتقل کرنے کی اکائی) موٹاپے کے امکانات کو بڑھانے کا بڑی حد تک ذمہ دار ہے۔

ماضی میں کی جانے والی تحقیق میں، FTO جین کو موٹاپے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا تھا۔ مگر اس نئی تحقیق کے مطابق FTO جین ماحولیات اور روزمرہ زندگی کے کئی عوامل کے باعث متحرک ہوتا ہے۔

سائنسدانوں کے مطابق، اسکی ایک مثال دوسری عالمی جنگ کے بعد سے زیادہ حراروں پر مشتمل خوراک، چربی والی خوراک اور زیادہ بڑی مقدار میں خوراک کھانے کا رجحان شامل تھا، جس کے باعث تب پیدا ہونے والے افراد اپنی والدین اور دادا دادی کی نسبت زیادہ موٹے تھے۔

امریکہ میں ہارورڈ میڈیکل اسکول اور میساچوسسٹس جنرل ہاسپٹل نے موٹاپے کے حوالے سے موروثیت اور موٹاپے کے تعلق کے بارے میں ایک تحقیق کی۔ اس تحقیق میں کئی دہائیوں تک 10000 سے زائد افراد کا ڈیٹا اکٹھا کیا گیا اور اس کا تقابلی جائزہ لیا گیا۔

اس تحقیق میں شامل تمام افراد کے وزن کا تعین بی ایم آئی یعنی body mass index فارمولے کے تحت ناپا گیا۔ بی ایم آئی فارمولے کے تحت، کسی بھی شخص کے کل وزن کو اس کے قد کے حساب سے تقسیم کیا جاتا ہے اور حاصل ہونے والا جواب موٹاپے کی شرح بتاتا ہے۔

اس تحقیق میں حصہ لینے والے 5000 افراد کے بچوں کی پیدائش اور ان بچوں کے ڈی این اے کی جانچ کے بعد، تحقیق دانوں نے تعین کیا کہ کونسے خاندانوں میں بچوں کو موٹاپے کے جینز وراثت میں ملے۔

جب تحقیق میں شامل افراد کے بی ایم آئی کو ان کی پیدائش کے سال سے جانچا گیا تو سائنسدانوں کو معلوم ہوا کہ FTO جین اور 1942 سے پہلے پیدا ہونے والے افراد کا آپس میں کوئی ربط اور تعلق نہیں۔ دوسری طرف 1942ء کے بعد پیدا ہونے والے افراد میں موٹاپے اور FTO جین کے درمیان مضبوط تعلق پایا گیا۔

مگر سائنسدانوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ کسی خاص جین کی بدولت ہی انسان موٹاپے کی طرف مائل نہیں ہوتا، بلکہ اس میں بہت حد تک اس بات کا انحصار بھی ہے کہ لوگ اپنی زندگی میں کس حد تک جسمانی سرگرمیوں میں حصہ لیتے ہیں یا پھر خوراک کے معاملے میں کس حد تک ذمہ داری سے کام لیتے ہیں۔

XS
SM
MD
LG