رسائی کے لنکس

‘اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری کرنے والے فلمی ہیروز کا ڈبل رول


‘اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری کرنے والے فلمی ہیروز کا ڈبل رول

‘اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری کرنے والے فلمی ہیروز کا ڈبل رول

’ایک پنتھ دو کاج ‘کی مثال توآپ نے سنی ہی ہوگی ۔بالی ووڈ فلموں کے کچھ فنکار ایسے ہیں جنہوں نے اس ضرب المثل کو حقیقت کا روپ دیتے ہوئے دنیا کو بیک وقت دو فنون سے روشناس کرایا۔ مثلاً ان کی پہلی پہچان تو اداکاری ہے مگر وہ اداکاری کے ساتھ ساتھ فلموں میں شوقیہ گلوکاری بھی کرتے رہے ۔ اگرچہ انہوں نے گلوکاری کی باقاعدہ کسی سے تربیت نہیں لی مگر ان کا کمال یہ ہے کہ انہوں نے اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری میں بھی نام کمایا ۔

آئیے آج ایسے ہی فنکاروں پر سرسری نظر ڈالی جائے جو ایکٹر ہونے کے ساتھ ساتھ پلے بیک سنگنگ بھی کرتے رہے :

امیتابھ بچن

اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری کرنے والوں میں سب سے پہلا نام امیتابھ بچن کا آتا ہے۔ یہ وہ فنکار ہے جسے ایک زمانے میں ریڈیو آڈیشن میں یہ کہہ کر فیل کردیا گیا تھا کہ ان کی آواز میں کوئی دم نہیں۔

یہ بات شاید ان کے دل میں گھر کرگئی اور انہوں نے اپنے فن میں وہ مہارت پیدا کی کہ ناصرف ان کی مکالمہ ادائیگی دوسرے فنکاروں کے لئے ایک مثال بن گئی بلکہ انہوں نے اپنی آواز سے وہ جادو جگایا کہ لوگ ان سے اداکاری کے ساتھ ساتھ گلوکاری بھی کرانے لگے۔

امیتابھ نے ایک دو نہیں پوری ستائس فلموں کے گانے اپنی آواز میں ریکارڈ کرائے۔ 1979ء میں دو فلموں یعنی ”دی گریٹ گیمبلر“ اور ” مسٹر نٹور لال“ میں امیتابھ نے جب اپنی بھاری آواز میں گیت گائے تو شائقین فلم نے ان کی اداکاری کی طرح ان کی صداکاری کو بھی بہت سراہا۔ ” گریٹ گیمبلر“ کی موسیقی راہول دیو برمن، جبکہ ”مسٹر نٹور لال“ کی موسیقی راجیش روشن نے ترتیب دی تھی۔

فلم ” مسٹر نٹور لال“ کے گیت ”میرے پاس آؤ میرے دوستو ایک قصہ سنو‘ ‘ نے تو امیتابھ کے لیے گیتوں کی لائن لگا دی۔ فلم ”لاوارث“ میں ان کے گیت ”میرے انگنے میں تمھارا کیا کام ہے“ نے کامیابی کے نئے ریکارڈ قائم کیے۔ آج بھی یہ گیت ہر جگہ سنا اور گایا جاتا ہے۔

مذکورہ فلموں کے علاوہ جن فلموں میں امیتابھ بچن نے اپنی آواز کا جادو جگایا ان میں ”سلسلہ،“ ”مہان“، ”پکار“، ”شرابی“، ”طوفان“، ”جادوگر“، ”خدا گواہ“، ”میجر صاحب“، ”سوریا ونشی“، ”عکس“، ”کبھی خوشی کبھی غم“، ”امان“ وغیرہ شامل ہیں۔

عامر خان

فلم ”ہم ہیں راہی پیار کے“ کا گیت ”چکنی صورت تو کہاں تھا اب تلک یہ بتا“ کس نے نہیں سنا ہوگا، اس گیت میں نظر آنے والا من موہنا معصوم سا لڑکا بالی ووڈ کا وہ ہیرو ہے جس نے بھارتی فلمی صنعت کو نہ صرف بطور اداکار کامیاب فلمیں دیں بلکہ بطور ہدایتکار اور گلوکار بھی اپنا لوہا منوایا ہے۔ ۔۔جی ہاں بات ہورہی ہے مسٹر پرفیکٹ یعنی عامر خان کی۔

بے شمار فلموں میں کام کرنے کے بعد اچانک 1998 میں ریلیز ہونے والی فلم’ ’غلام“ میں بطور گلوگار عامر خان نے جب ”آتی کیا کھنڈالا‘ ‘گایا تو نوجوانوں کی زبانوں پر یہ گیت ایسا رچ بس گیا کہ اس گیت نے نوجوانوں کی عام بول چال کے حصے کی شکل اختیار کرلی۔

اس گیت کے بعد عامر نے اور بھی بہت سے گیت گائے۔ فلم ”فنا “میں عامر نے کاجول، سونونگم اور سنیدھی چوہان کے ساتھ گیت ”میرے ہاتھ میں‘ گا کر شائقین کے دل جیت لیے تھے۔ ان گیتوں کے بعد عامر کے گیت مقبولیت کی سند حاصل کرنے لگے اور انھوں نے بہت سی فلموں میں نہ صرف سولو گیت گائے بلکہ بالی ووڈ کی نامور گلوکاراؤں کے ساتھ دوگانوں کے علاوہ بہت سے کورس گیت بھی گائے۔

عامر نے جن گیتوں میں گلوکاری کی ان میں فلم ”تارے زمین پر“، ”میلہ“ خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔ عامر نے کئی البمز کے لیے بھی گیت گائے ۔ انہوں نے شان، ہری ہرن، ادیت نارائن، الکا یاگنک، سونو نگم ، سنیدھی چوہان اور بالی ووڈ کے صف اول کے کئی گلوکاروں کے ساتھ گیت گائے ہیں جو خاص و عام میں آج بھی مقبول ہیں۔

نانا پاٹیکر

نانا پاٹیکر کا شمار بھارت کے مقبول ترین اداکاروں میں ہوتاہے۔ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ ان کا مقابلہ اطالوی نژاد امریکی اداکار الپا چینو ہی سے کیا جا سکتا ہے جس نے ہالی ووڈ میں اپنی منفرد اداکاری سے زبانوں کی سرحدیں عبور کر کے بین الاقوامی شہرت حاصل کرلی تھی۔

نانا پاٹیکر بھی ایک ایسے ہی ورسٹائل فنکار ہیں، جنھیں جذباتی اداکاری میں ملکہ حاصل ہے۔ نانا نے جہاں فلم بینوں کو اپنی اداکاری سے اپنا فین بنایا ہے، وہیں اپنی آواز اور موسیقی کے آلات کے ملاپ سے ایک ایسا گیت عوام کو دیا جسے عوامی ہی کہا جا سکتا ہے۔ ”ایک مچھر“ جیسا گیت گا کر نانا نے اداکاری کے بعد سرتال کی دنیا میں بھی اپنے قدم انتہائی مضبوط کرلیے ہیں۔

اس کے بعد ایک اور گیت ”جو ہوتا اس کو ہونے دے، جو روتا اس کو رونے دے“ نے بھی خاصی مقبولیت حاصل کی۔ میوزک ڈائریکٹر سنجیو کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ گیت نانا پاٹیکر کی شخصیت اور ان کی آواز کو سامنے رکھ کر تیار کیا تھا اور اس کی دھن خاص طور پر انھی کے لیے کمپوز کرائی تھی۔ نانا پاٹیکر اگرچہ گلوکاری کے میدان میں وہ رنگ نہیں جما پائے جو امیتابھ بچن نے جمایا تھا تاہم اپنے عوامی رنگ کی وجہ سے نانا مقبولیت کی بلندیوں پر ہیں۔

رنبیر کپور

بالی ووڈ اداکا رنبیر کپور نے اپنی اداکاری سے تو فلم بینوں کو اپنا دیوانہ بنایا ہی تھا مگر ایسا لگتا ہے کہ وہ بالی ووڈ میں باقاعدہ گلوگار بننے کے لیے پر تول رہے ہیں۔ اپنی فلم ”راک اسٹار“ کی نمائش سے قبل فلم کی پروموشن کیلئے رنبیر کپور نے ممبئی میں کنسرٹ کر ڈالا۔ اس کنسرٹ میں رنبیر کے ساتھ فلم کے ڈائریکٹر امتیاز علی اور موسیقار اے آر رحمن بھی شریک ہوئے۔ کنسرٹ میں گلوکاروں نے فلم ” راک اسٹار“ کے گانے گائے۔

XS
SM
MD
LG