رسائی کے لنکس

سری لنکا انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرے: کیمرون


کیمرون جافنا میں تامل لوگوں سے بات کر رہے ہیں

کیمرون جافنا میں تامل لوگوں سے بات کر رہے ہیں

برطانوی وزیر اعظم کے بقول اگر سری لنکا انسانی حقوق کے معاملے پر بین الاقوامی تحفظات پر توجہ نہیں دیتا تو ان کا ملک اقوام متحدہ کی قیادت میں اس کی تحقیقات کے لیے کوششیں کرے گا۔

برطانیہ کے وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے سری لنکا کو خبردار کیا ہے کہ وہ انسانی حقوق اور خانہ جنگی کے بعد مصالحتی عمل کو تیز کرے بصورت دیگر وہ بین الاقوامی تحقیقات کے لیے تیار رہے۔

دولت مشترکہ کے اجلاس کے موقع پر ہفتہ کو کولمبو میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے برطانوی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ سری لنکا کی 27 سالہ خانہ جنگی کے دوران اور اس کے بعد انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور جنگی جرائم کا معاملہ پس پشت نہیں ڈالا جا رہا۔

ان کے بقول اگر سری لنکا انسانی حقوق کے معاملے پر بین الاقوامی تحفظات پر توجہ نہیں دیتا تو ان کا ملک اقوام متحدہ کی قیادت میں اس کی تحقیقات کے لیے کوششیں کرے گا۔

مسٹر کیمرون کا یہ بھی کہنا تھا کہ جنگ سے تباہ حال خطے جافنا میں حقیقت حال کا جائزہ لینے کے بعد واپسی پر ان کی سری لنکا کے صدر مہندا راجا پاکسے کے ساتھ بے تکلف انداز میں بات چیت ہوئی اور انھوں نے یہ محسوس کیا کہ کولمبو ان معاملات پر پیش رفت کرنا چاہتا ہے۔

تاہم پانی کے وزیر نمل سریپالاڈے سلوا نے مسٹر کیمرون کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ سری لنکا کسی بھی بین الاقوامی تحقیقات کی مزاحمت کرے گا۔

سری لنا کے شمالی علاقے جافنا میں کئی دہائیوں تک فوجیوں اور تامل نسل کے باغیوں کے درمیان لڑائی ہوتی رہی۔
XS
SM
MD
LG