رسائی کے لنکس

ٹرمپ کی ریلی سے گرفتار ہونے والے برطانوی نوجوان پر فرد جرم عائد


فائل فوٹو

فائل فوٹو

گرفتار ی کے بعد اسٹینڈفورڈ نے کہا کہ اگر اسے رہا کر دیا گیا تو وہ ایک بار پھر ڈونلڈ ٹرمپ کو ہلاک کرنے کی کوشش کرے گا۔

ایک برطانوی شہری پر بدھ کو غیر قانونی اسلحہ رکھنے کی فرد جرم عائد کی گئی ہے جس کے بارے میں امریکی حکام کا کہنا ہے کہ اس نے ریپبلکن جماعت کے متوقع صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو لاس ویگاس میں ایک ریلی کے دوران قتل کرنے کی کوشش کی۔

ایک گرینڈ جیوری نے 20 سالہ مائیکل اسٹیون اسٹینڈفورڈ پر غیر ملکی شہر ی ہوتے ہوئے ہتھیار رکھنے اور سرکاری امور کی انجام دہی میں مداخلت کی فرد جرم عائد کی ہے۔ اگر اس پر یہ جرم ثابت ہوتا ہے تو اسے 30 سال قید کی سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

قانون نافذ کر نے والے ادارے کے ایک عہدیدار کا کہنا ہے کہ مائیکل اسٹیون اسٹینڈفورڈ کیلی فورنیا سے نیویڈا اس مقصد کے لیے آیا تھا کہ وہ لاس ویگاس میں ڈونلڈ ٹرمپ کی ریلی میں شرکت کر سکے۔ ریلی میں پہنچ کر اس نے سیکورٹی پر مامور ایک پولیس اہلکار سے بندوق چھیننے کی کوشش کی تھی۔

اسٹینڈ فورڈ نے حکام کو بتایا کہ اس نے 17 جون سے قبل کبھی بھی بندوق نہیں چلائی تھی اور ریلی سےایک دن پہلے وہ بندوق چلانے کی تربیت حاصل کرنے کے لیے ایک مقامی گن کلب گیا۔

گرفتار ی کے بعد اسٹینڈفورڈ نے کہا کہ اگر اسے رہا کر دیا گیا تو وہ ایک بار پھر ڈونلڈ ٹرمپ کو ہلاک کرنے کی کوشش کرے گا۔ اس نے یہ بھی بتایا تھا کہ اگر وہ لاس ویگاس میں یہ کوشش نا کرتا تو اس نے یہ ارادہ کیا تھا کہ وہ ایریزونا کی ریلی کے دوران دوبارہ ایسا کرنے کی کوشش کرتا۔

اسٹیڈفورڈ پر یہ بھی الزام ہے کہ وہ اپنے ویزے کی معیاد ختم ہونے کے بعد بھی امریکہ ہی میں مقیم رہا۔

XS
SM
MD
LG