رسائی کے لنکس

چلّی: زلزلے کے سخت جھٹکے اور نئے صدر کی حلف برداری


حکومت کو کسی ممکنہ سُونامی کے بارے میں انتباہ جاری کرنا پڑا، تاہم اُسے بعد میں واپس لے لیا گیا

چلّی میں جہاں جمعرات کے روز نئے قدامت پسند صدر سبَس تئین پِنیرا نے اپنے عہدے کا حلف اُٹھایا ہے، زلزلے کے کئى شدید جھٹکوں نے ایک بار پھر اُن کے ملک کو ہلادیا، اعصاب کو جھنجوڑ دیا اور حکومت کو کسی ممکنہ سُونامی کے بارے میں انتباہ جاری کرنا پڑا۔ تاہم اُسے بعد میں واپس لے لیا گیا۔

امریکہ کے جیولاجیکل سروے کا کہنا ہے کہ سب سے طاقتور جھٹکے کی شدّت 6.9 تھی اور اس کا مرکز دارالحکومت سان تیاگو سے کوئى 145 کلومیٹرجنوب مغرب میں چِلّی کا لِبرٹیڈور او ہِگنز کا علاقہ تھا۔

یہ فروری کے آخر میں 8.8 درجے کی شدّت کے اُس طاقتور زلزلے کے بعد، جس میں تقریباّ 500 لوگ ہلاک ہوئے تھے، ملک میں زلزلے کا سب سے شدید جھٹکا تھا۔ان تازہ ترین جھٹکوں کے بعد فوری طور پر جانی یا املاک کے نقصان کی اطلاع نہیں ملی ۔

زلزلے کے ان جھٹکوں کو اُن اہم شخصیتوں اور عمائدین نے بھی محسوس کیا ، جو دارالحکومت سے مغرب میں 130 کلو میٹر دُور ساحلی شہر وَلپرَیسو میں مسٹر پنیرا کی حلف برداری کی تقریب میں شرکت کررہے تھے۔زلزلے کے دوران وہاں عمارتیں لرزتی رہیں اور کھڑکیاں کھڑکھڑاتی رہیں۔ لیکن حلف برادری کی کارروائى کسی خلل کے بغیر جاری رہی۔

XS
SM
MD
LG