رسائی کے لنکس

ترقیاتی منصوبے، چین افغانستان میں سرمایہ کاری کرے گا


فائل

فائل

افغان وزارتِ خارجہ کے مطابق ڈیم اور دیگر منصوبوں میں چین کی سرمایہ کاری کی تفصیلات مستقبل میں ہونے والے سہ فریقی اجلاسوں میں طے کی جائیں گی۔

چین نے افغانستان میں ڈیم، بجلی گھر ، سڑک اور ریلوے لائن کی تعمیر جیسے اہم ترقیاتی منصوبوں میں سرمایہ کاری کرنے کا اعلان کیا ہے۔

چین کی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے منگل کو صحافیوں کو بتایا ہے کہ بیجنگ حکومت صوبہ کنٹر میں ہائیڈرو پاور پلانٹ اور افغانستان اور پاکستان کے درمیان سڑکوں اور ریلوے لائن کی تعمیر کے منصوبوں میں افغانستان کے ساتھ تعاون کرے گی۔

افغان حکام کے مطابق دریائے کنڑ پر تعمیر کیے جانے والا بند اور بجلی گھر پہلے صرف پاکستان کے تعاون سے تعمیر کیا جارہا تھا۔

منصوبے سے 1500 میگاواٹ بجلی حاصل ہوگی جس میں سے کچھ پاکستان خریدے گا۔

پاکستان نے 2013ء میں پشاور اور کابل کے درمیان موٹروے اور افغانستان کے جنوبی شہر قندھار اور پاکستان کے سرحدی شہر چمن کے درمیان ریلوے لائن بچھانے کا بھی اعلان کیا تھا جو اب چین کے تعاون سے مکمل کیے جائیں گے۔

چین کی جانب سے اس سرمایہ کاری کا اعلان افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ہونے والے سہ فریقی اجلاس کے ایک روز بعد کیا گیا ہے۔

اجلاس میں افغانستان، پاکستان اور چین کے اعلیٰ سطحی نمائندوں نے شرکت کی تھی۔

افغان وزارتِ خارجہ کے ترجمان سراج الحق سراج نے خبر رساں ادارے 'رائٹرز' کو بتایا ہے کہ ڈیم اور دیگر منصوبوں میں چین کی سرمایہ کاری کی تفصیلات مستقبل میں ہونے والے سہ فریقی اجلاسوں میں طے کی جائیں گی۔

امکان ہے کہ چین کے تعاون کے بعد یہ منصوبے جلد مکمل ہوسکیں گے لیکن یہ واضح نہیں کہ افغانستان میں جاری بدامنی ان منصوبوں پر کس طرح اور کتنا اثر انداز ہوگی۔

چین اس سے قبل افغانستان میں تانبے کی ایک کان اور کابل کے نزدیک ریلوے لائن بچھانے کے منصوبے میں بھی بڑی سرمایہ کاری کر چکا ہے لیکن یہ دونوں منصوبے افغانستان میں جاری پرتشدد کارروائیوں کے باعث جزوی طور پر معطل ہیں۔

کابل میں ہونے والے سہ فریقی اجلاس میں تینوں ملکوں نے افغان طالبان کو مذاکرات پر آمادہ کرنے کی کوششوں اور طریقوں پر بھی تبادلۂ خیال کیا۔

افغانستان سے غیر ملکی فوجوں کے انخلا کے بعد یہاں چین کی دلچسپی میں اضافہ ہوا ہے اور چینی حکومت افغانستان میں کئی بڑے ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل میں مدد دینے کا اعلان کیا ہے۔

XS
SM
MD
LG