رسائی کے لنکس

چینی بینک نےامریکی بینک خرید لیا


چینی بینک نےامریکی بینک خرید لیا

چینی بینک نےامریکی بینک خرید لیا

پہلی مرتبہ، ایک مملکتی کنٹرول میں کام کرنے والے چینی بینک نے ایک امریکی مالی ادارے کے حقوقِ ملکیت کے حصول کے لیےسمجھوتے پر دستخط کیے ہیں۔

انڈسٹریل اینڈ کمرشل بینک آف چائنا نے، جسے کئی اعتبار سے دنیا میں چین کا سب سے بڑا بینک تسلیم کیا جاتا ہے، مشرقی ایشیا میں کام کرنے والے ایک امریکی ادارے کے 80فی صد حصص کی ملکیت حاصل کرنے کے لیے تقریباً دس کروڑ ڈالر ادا کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ یہ بینک ہانگ کانگ میں قائم ہے تاہم امریکہ کی کیلیفورنیا اور نیو یارک ریاستوں میں اِس کی 13شاخیں ہیں۔

اِس معاہدے پر جمعے کو چینی صدر ہُو جِن تاؤ کے چار روزہ دورے کے اختتام پر شکاگو میں دستخط ہوئے، جِس کی منظوری امریکی ضابطہ کار عہدے داروں کے دستخط سے ہونا باقی ہے، جس بنا پر اِس معاہدے کی تکمیل میں اِس سال کے اواخر تک کی تاخیر ہوسکتی ہے۔

اِس چینی بینک کا 70فی صد حصہ حکومتِ چین کی ملکیت ہے۔ اگر سمجھوتہ منظور ہو جاتا ہے تو ایک چینی ریاست کے ضابطہٴ کارمیں کام کرنے والا بینک پہلی بار ایک امریکی مالی ادارے کا کنٹرول سنبھال لے گا۔ اب امریکیوں کے لیے یہ ممکن ہوگا کہ وہ اِس بینک کی شاخوں میں پیسے جمع کراسکیں گے جب کہ سرمایہ کار اکاؤنٹ کھول کرچینی سکہ یوئان میں تجارت کر پائیں گے۔

حالیہ برسوں میں چین نے مختلف نوع کی صنعتوں میں اپنی بیرونی سرمایہ کاری میں تیزی سے اضافہ کیا ہے۔ تاہم ، چین اپنے مالی اداروں تک رسائی دینے کے معاملے پر سست روی کا مظاہرہ کرتا رہا ہے۔

جب نئے معاہدے پر دستخط ہو رہے تھے چین کے تجارت کے وزیر چن ڈیمنگ نے کہا کہ ملکی ترجیحات میں سے ایک ترجیح یہ ہے کہ چین بیرونی ملکوں میں اپنےوسیع زرِ مبادلہ کو اثاثوں میں تبدیل کرے۔

XS
SM
MD
LG