رسائی کے لنکس

کلنٹن نے پاک افغان سِویلیّن حکمت عملی جاری کر دی


امریکی وزیر خارجہ ہلری کلنٹن نے افغانستان اور پاکستان کے لیے غیر فوجی بنیاد پر ایک ایسی حکمت عملی کی نقاب کُشائى کی ہے، جس کے تحت اس خطّے میں امریکہ کے سویلیّن ماہرین کی تعداد میں نمایاں اضافہ کر دیا جائے گا۔

نیا منصوبہ صدر براک اوباما کی اُس نئى فوجی حکمت عملی کے ساتھ شروع ہو رہا ہے، جس کا اعلان گذشتہ دسمبر میں کیا گیا تھا اور جس کے تحت باغیوں کی پیش قدمی کو پسپائى میں بدلنے کے لیے مزید30 ہزار امریکی فوجی افغانستان بھیجے جا رہے ہیں۔

افغانستان میں اس نئى حکمت عملی کے تحت روزگار کے وسائل پیدا کرنے، حکومت کے اسلوبِ کار کو بہتر بنانے اور باغیوں کو میدانِ جنگ چھوڑ دینے کی ترغیب دینے کے لیے اقتصادی امداد اور خاص طور پر زرعی شعبے میں امداد میں اضافہ کیا جائے گا۔منصوبے میں سِولیّن ماہرین کی تعداد کو بھی بڑھا کر ایک ہزار سے زیادہ کر دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے، یہ ماہرین اسی مہینے افغانستان پہنچنے والے ہیں۔

وزیر خارجہ ہلری کلنٹن نے محکمہٴ خارجہ کی رپورٹ کے تعارف میں کہا ہے کہ امریکہ کی فوجی کارروائى اگرچہ ہمیشہ جاری نہیں رہے گی، لیکن امریکہ افغانستان اور پاکستان کے ساتھ دیر پا شراکت داری قائم کرنے کا عزم رکھتا ہے۔انہوں نے منصوبے کو جامع اور خطّے کے لیے بہترین امکانات کا حامل قرار دیا۔

XS
SM
MD
LG