رسائی کے لنکس

’ہیلری تجربے کار اور باصلاحیت صدر ثابت ہوں گی‘: اوباما


نارتھ کیرولینا

نارتھ کیرولینا

صدر براک اوباما نے کہا کہ وہ اور ہیلری کلنٹن ’’امریکہ کے بارے میں مشترکہ نصب العین کے حامی ہیں۔

صدر براک اوباما نے منگل کے روز نارتھ کیرولینا کے شہر شارلے میں ڈیمو کریٹک پارٹی کی متوقع صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن کی حمایت میں انتخابی مہم کی ایک ریلی سے خطاب کیا، جس میں اُنھوں نے ووٹروں سے کہا کہ وہ ہیلری کلنٹن کو امریکہ کے اگلے صدر کے طور پر منتخب ہونے میں مدد دینے کے خواہاں ہیں۔

اوباما نے یاد دلایا کہ آٹھ برس قبل صدارتی مہم کے دوران ڈیموکریٹک پارٹی کی پرائمریز کی سطح پر دونوں نے ایک دوسرے کے خلاف انتخابی مہم چلائی تھی۔

صدر نے کہا کہ سنہ 2008 میں اُس صدارتی مہم کے دوران اُنھوں نے کلنٹن کی تیاری، سمجھ بوجھ اور قوتِ برداشت کا مظاہرہ دیکھا تھا جس کے باعث وہ خود مزید تیاری کر کے میدان میں اترتے تھے۔

اُنھوں نے کہا کہ وہ اور ہیلری کلنٹن ’’امریکہ کے بارے میں مشترکہ نصب العین کے حامی ہیں اور ایسے میں جب قوم اعتماد اور پیش رفت دکھا رہی ہے‘‘ مستقبل کے بارے میں دونوں کی سوچ مزید ’’پختہ ہو گئی یے‘‘۔

امریکی وزیر خارجہ کے طور پر، صدر نے کلنٹن کے ریکارڈ کو سراہتے ہوئے کہا کہ ملک کی اعلیٰ ترین سفارت کار کی حیثیت سے اُنھوں نے ’’عمدہ کام‘‘ کیا۔ ساتھ ہی صدر نے کہا کہ وہ ایک طویل عرصے سے عام آدمی کے لیے قابلِ قبول صحت عامہ کی سہولت اور وہ شروع سے عام امریکی خاندان کی اعانت کی پالیسیوں کی حامی رہی ہیں۔

اپنے خطاب میں ہیلری کلنٹن نے نمایاں خدمات کی انجام دہی پر صدر اوباما کو سلام پیش کیا۔ کیرولینا میں ریلی کے خطاب کے دوران شرکا کی دلچسپی اور ولولہ نمایاں تھا۔ کلنٹن نے کہا کہ ’’ہم دونوں اِس بات پر متفق ہیں کہ امریکہ کا مستقبل درخشاں ہے‘‘۔

اُنھوں نے اپنے خطاب میں اپنی پالیسی ترجیحات کا تفصیلی ذکر کیا تاکہ بقول اُن کے، ’وال اسٹریٹ’ کے امیر ادارے ٹیکس کی ادائیگی کو بہتر بنائیں، اُن کمپنیوں پر جرمانے عائد ہوں گے جو روزگار کے مواقع بیرون ملک منتقل کریں گی، اُن اداروں کو بہتر منافع دیا جائے گا جو امریکی کارکنان کو روزگار فراہم کرتے ہیں اور یونیورسٹی کی تعلیم کے دوران امریکی طالب علموں کے ذمے بڑے قرضوں کو کم یا ختم کرنے کا اہتمام کیا جائے گا۔

XS
SM
MD
LG