رسائی کے لنکس

پاکستانی استقامت کےساتھ دہشت گردی کا مقابلہ کر رہے ہیں: ہلری کلنٹن


امریکی وزیرِ خارجہ ہلری کلنٹن نے دہشت گردی کے حوالے سے کہا ہے کہ پاکستانی عوام نے اندوہناک نقصانات جھیلے ہیں لیکن وہ خوف کے شکار ماحول کا استقامت کے ساتھ مقابلہ کر رہے ہیں، اوریہ کہ، امریکہ اُن کے ساتھ ہے۔

اُنھوں نے یہ بات پیر کوپشاور کے امریکی قونصل خانے پر حملے کے بارے میں جاری کردہ اپنے بیان میں کہی۔

وزیرِ خارجہ نے کہا کہ اپنے اسٹاف کے ارکان کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے امریکہ ہر ممکن اقدام لے رہا ہے، جِن میں امریکی اور پاکستانی دونوں طرح کے ملازمین، اور سکیورٹی سے متعلق امریکی تنصیبات شامل ہیں۔

اُن کے الفاظ میں ‘ ہم پاکستانی اہل کاروں کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں، جو حملہ آوروں کو کیفرِ کردار تک لانے کے لیے کوشاں ہیں۔’

پشاور میں ہمارے قونصل خانے پرہونے والے حملے پر مجھے رنج اور سخت افسوس ہوا ہے۔ ہماری خواہشات اورنیک تمنائیں ہلاک ہونے والے سکیورٹی کے پاکستانی اہل کاروں اور زخمی ہونے والے دیگرخاندانوں کے ساتھ ہیں۔ سفارتی اداروں کے خلاف حملے بین الاقوامی تعاون کے جذبے پر حملے کے مترادف ہیں اور کسی بھی ملک کے لیے کبھی بھی قابلِ قبول نہیں ۔

‘ہم اپنے سفارتی مشن پر کیے جانے والے إِس حملے، حالیہ دِنوں میں بغداد کے بم حملوں جن میں دیگر سفارتی تنصیبات کو ہدف بنایا گیا، اور اِس قسم کے تمام جرائم کی مذمت کرتے ہیں۔’

اُن کا کہنا تھا کہ، آج صبح ہونے والے حملے تشدد کی اُس لہر کی کڑی ہیں جو درندہ صفت انتہا پسند پاکستان کی جمہوریت کو نقصان پہنچانے اور صفوں میں خوف اور اختلاف کے بیج بونے کے لیے کر رہے ہیں۔

‘پاکستانی عوام نے اندوہناک نقصانات جھیلے ہیں لیکن وہ اِس خوف کے شکار ماحول کا استقامت کے ساتھ مقابلہ کر رہے ہیں، اور امریکہ اُن کے ساتھ کھڑا ہے۔’

‘ ہم اپنے اسٹاف کے ارکان کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدام لے رہے ہیں، جِن میں امریکی اور پاکستانی دونوں طرح کے ملازمین، اور سکیورٹی سے متعلق ہماری تنصیبات شامل ہیں۔ اور ہم پاکستانی اہل کاروں کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں، جو حملہ آوروں کو کیفرِ کردار تک لانے کے لیے کوشاں ہیں۔ ہم تہہ دل سے پاکستانی سکیورٹی فورسز کی طرف سے مؤثر فوری مدد مہیہ کرنےکے اقدام کو سراہتے ہیں۔’

‘یہ المیہ اُن یکساں چیلنجوں کی نشاندہی کرتا ہے جو دونوں ملکوں کودرپیش ہیں ، اور باہمی ساجھے داری کو مضبوط کرنے کے امریکی عزم کو مزید تقویت بخشتا ہے۔’

XS
SM
MD
LG