رسائی کے لنکس

برمنگھم ٹیسٹ کا پہلا دن: ۔بھارت 224 آل آؤٹ، انگلینڈ 0/84


برمنگھم ٹیسٹ کا پہلا دن: ۔بھارت 224 آل آؤٹ، انگلینڈ 0/84

برمنگھم ٹیسٹ کا پہلا دن: ۔بھارت 224 آل آؤٹ، انگلینڈ 0/84

ایجبسٹن، برمنگھم میں انگلینڈ اور بھارت کی ٹیموں کے درمیان سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میچ کے پہلے دن کھیل کے اختتام پر انگلینڈ نے بغیر کسی نقصان کے 84 رنز بنائے تھے۔ اینڈریو سٹراس 52 اور الیسٹر کک 27 کے انفرادی سکور پر ناٹ آوٹ ہیں۔ بھارت کی برتری ختم کرنے کے لیے انگلینڈ کو مزید 140 رنز کی ضرورت ہے ۔ اس سے قبل بھارت کی ٹیم اپنے پہلی اننگ میں 224 رنز بنا کر آوٹ ہو گئ۔ سوکے سکور پر چھ وکٹیں گرنے کے بعد ، جب ٹیم شدید مشکلات سے دوچار تھی کپتان مہندرا سنگھ دھونی نے جارحانہ مگر ذمہ دارانہ بلے بازی کی۔ 77 کے انفرادی سکور پر براڈ کی گیند پر آوٹ ہوئے۔

ایک موقع پر جب 111 پر سات وکٹ گر چکی تھیں، دھونی کی ففٹی اور پراوین کمار کے ساتھ آٹھویں وکٹ پر 84 رنز کی شراکت نے ٹیم کو ایک مناسب مجموعی سکور تک پہنچا دیا۔ دھونی کی اننگ میں تین چھکے اور دس چوکے شامل تھے۔ پراوین کمار نے چار چوکوں اور ایکے چھکے کی مدد سے 26 رنز بنائے۔ آخری آوٹ ہونے والے کھلاڑی ایشانت شرما تھے جنہوں نے چار رنز بنائے

انگلینڈ نے ٹاس جیت بھارت کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ آٹھ کے سکور پرپہلی وکٹ گری جب اوپنر وریندر سہواگ بغیر کوئی رن بنائے آوٹ ہو گئے۔ سچن ٹندولکر آج پھر بڑی اننگ نہ کھیل سکے اور صرف ایک رن بنا سکے۔ راہول ڈریوڈ نے 22 رنز سکور کیے۔اوپنرگھمبیر 38 رنز بنا کر آوٹ ہوئے۔ اور لکشمن نے 30 رنز بنائے ۔ سریش رائنا چار رنز بنا سکے۔

انگلینڈ کی طرف سے کامیاب باولر بریسنین ہیں اور سٹورٹ براڈ نے چار چار اور اینڈرسن نے دو وکٹیں حاصل کیں ۔ ایک سو گیارہ ک سکور پر جب سات وکٹیں گر چکی تھیں تو لگ رہا تھا کہ ٹیم شاید ایک سو پچاس تک بمشکل پہنچ پائے گی مگر اس موقع پر کپتان دھونی کی جارحانہ بلے بازی نے ٹیم کو ایک مناسب سکور تک پہنچا دیا ہے۔ بھارت کی ٹیم اس پوری سیریز میں انگلینڈ کے خلاف تین سو یا اس سے زائد رنز نہیں بنا سکی۔ جس کے باعث ٹیم کو بھارت کے سابق کھلاڑیوں اور مبصرین کی تنقید کا سامنا ہے۔

انگلینڈ کو سیریز میں 0-2 کی برتری حاصل ہے۔ برمنگھم ٹیسٹ میں فتح کی صورت میں میزبان ٹیم نہ صرف سیریز میں فیصلہ کن برتری حاصل کر لے گی بلکہ عالمی درجہ بندی میں وہ پہلے نمبر پر آ جائے گی۔ اور ہار کی صورت میں بھارت جو اس وقت نمبر ون ہے، دو درجے تنزل کے ساتھ تیسرے نمبر پر چلی جائے گی۔

XS
SM
MD
LG