رسائی کے لنکس

چڑیا گھر کے حکام فوری طور پر اس بات کا جواب دینے سے قاصر ہیں کہ شیر نے یہ حملہ آخر کیوں کیا۔

امریکہ کی ریاست ٹیکساس کے شہر ڈیلاس کے چڑیا گھر میں شیر نے ایک شیرنی کو ہلاک کر دیا ہے، اور حکام فوری طور پر اس بات کا جواب دینے سے قاصر ہیں کہ شیر نے یہ حملہ آخر کیوں کیا۔

اتوار کی دوپہر پیش آنے والے اس واقعہ کے وقت پنجرے کے باہر موجود لوگوں کے مطابق دو شیر پانچ سالہ شیرنی کی جانب بڑھے اور پھر ایک شیر نے اس کی گردن کو اپنے جبڑے میں دبوچ لیا۔

مقامی ٹیلی ویژن اسٹیشن ’ڈبلیو ایف اے اے‘ سے گفتگو کرتے ہوئے اس واقعہ کے عینی شاہد نے بتایا کہ ’’پہلے تو یوں لگا جیسے وہ کھیل رہے ہوں لیکن پھر معلوم ہوا کہ شیر تو شیرنی کو ہلاک کر رہا ہے ... سب یہ دیکھ رہے تھے اور اُنھیں اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آ رہا تھا۔‘‘

چڑیا گھر کے حکام کا کہنا ہے کہ جوہری نامی شیرنی جلد ہی ہلاک ہو گئی۔ عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ شیر نے شیرنی کو ’’تقریباً 10 منٹ تک دبوچے رکھا ... جب تک وہ بے جان نہیں ہو گئی‘‘۔

چڑیا گھر کے عملے نے شیروں کی توجہ ہٹانے کے لیے اُن کی جانب گوشت بھی پھینکا، لیکن جب یہ طریقہ کارگر ثابت نا ہوا تو سکیورٹی پر معمور عملے نے لوگوں کو وہاں سے ہٹا دیا اور وہ طعام خانہ بھی بند کر دیا گیا جس کی کھڑکیوں سے شیروں کے پنجرے کا نظارہ کیا جا سکتا ہے۔

چڑیا گھر کے نائب صدر کا کہنا ہے کہ عمومی طور پر پنجرے میں پانچ شیر موجود ہوتے ہیں اور اس واقعہ سے پہلے کبھی یہ خطرہ محسوس نہیں کیا گیا کہ یہ ایک دوسرے پر حملہ آور ہو سکتے ہیں۔

اس واقعہ میں شامل دو شیر اور شیرنی گزشتہ تین برسوں سے اس ہی پنجرے میں رہ رہتے تھے۔
XS
SM
MD
LG