رسائی کے لنکس

’بین الاقوامی ایکٹرز اپنی لڑائی کوئٹہ میں لڑ رہے ہیں‘

  • قمرعباس جعفری

بلوچستان کے وزیر اعلیٰ، ڈاکٹر عبد المالک نے مشورہ دیا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے پاکستان، بھارت، افغانستان اور ایران کو ایک مشترکہ حکمتِ عملی تشکیل دینا ہوگی، ورنہ، بقول اُن کے، سارے ممالک اس کی زد میں آئیں گے

بلوچستان کے وزیر اعلیٰ، ڈاکٹر عبدالمالک نے کہا ہے کہ بلوچستان کے فرقہ وارانہ واقعات میں، بقول اُن کے، ’بین الاقوامی ایکٹرز‘ ملوث ہیں، ’جو اپنی لڑائی کوئٹہ میں لڑ رہے ہیں‘۔
تاہم، اُنھوں نے کہا کہ اِس بات کی وضاحت نہیں کی۔

بدھ کے روز ’وائس آف امریکہ‘ کے ساتھ ایک انٹرویو میں، ڈاکٹر مالک نے کہا کہ،’ہم دہشت گردی کے واقعات کی مذمت کرتے ہیں اور اس علاقے میں استحکام کے خواہاں ہیں‘۔

اُنھوں نے مشورہ دیا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے پاکستان، بھارت، افغانستان اور ایران کو ایک مشترکہ حکمتِ عملی وضع کرنی چاہیئے، ورنہ سارے ممالک اس میں مزید الجھتے جائیں گے۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ’اِس علاقائی تنازع سے باہر نکل آئیں‘، جِس کے لیے، بقول، اُن کے ’جہادی پالیسی‘ کا از سرِ نو جائزہ لینا ہوگا۔ تاہم، اُنھوں نے اِس کی وضاحت نہیں کی۔

ڈاکٹر مالک کے مطابق، یہ معاملہ ’بہت پیچیدہ‘ ہے، جس سے نمٹنے کے لیے صوبائی حکومت، وفاقی حکومت کی مدد سے، کوششیں کر رہی ہے۔

اُنھوں نے اِس امید کا اظہار کیا کہ اِن مسائل کو کامیابی سےحل کرلیا جائے گا۔

تفصیلی انٹرویو سننے کے لیے، آڈیو رپورٹ پر کلک کیجئیے:

XS
SM
MD
LG