رسائی کے لنکس

شمالی وزیرستان: سال کے پہلے روز تین میزائل حملوں میں 15 ہلاک

  • شمیم شاہد

(فائل فوٹو)

(فائل فوٹو)

شمالی وزیرستان میں سال 2011ء کے پہلے روز مختلف مقامات پرتین مبینہ امریکی ڈرون حملوں میں کم از کم 15 مشتبہ عسکریت پسند ہلا ک ہو گئے ہیں۔

بغیر پائلٹ کے طیارے سے داغے گئے میزائلوں کا پہلا ہدف سپن وام میں عسکریت پسندوں کی گاڑی تھی جس میں سوار 7 شدت پسند ہلاک ہو گئے۔ دوسرا میزائل حملہ اُس وقت کیا گیا جب کہ پہلے حملے کے مقام پر مشتبہ جنگجو امدادی سرگرمیوں میں مصروف تھے اس حملے میں چار مزید شدت پسند مارے گئے۔

تیسرا حملہ تحصیل دتہ خیل کے علاقے میں عسکریت پسندوں کی ایک گاڑی تھی۔

جمعہ کو سال کے آخری روز شمالی وزیرستان کے غلام خان کے علاقے میں پیدل اور ایک گاڑی میں سوار عسکریت پسندوں کو میزائل حملوں کا نشانہ بنایا گیا جس میں کم ازکم آٹھ جنگجو ہلاک ہو گئے تھے۔

ذرائع ابلاغ کی قبائلی علاقوں تک رسائی نا ہونے کی وجہ سے میزائل حملوں اور ان میں ہونے والے جانی اور مالی نقصان کی آزاد ذرائع سے تصدیق نا ممکن ہے۔

سال2010ء میں پاکستان کے قبائلی علاقوں میں 117 سے زائد مبینہ امریکی میزائل حملوں میں سے زیادہ تر کا ہدف شمالی وزیرستان میں طالبان اور القاعدہ سے تعلق رکھنے والے عسکریت پسندوں کے ٹھکانے تھے۔

افغان سرحد سے ملحقہ یہ قبائلی علاقہ افغان طالبان کے حقانی نیٹ ورک کا گڑھ مانا جاتا ہے اور باور کیا جاتا ہے کہ مقامی شدت پسندوں کی مدد سے یہ جنگجو سرحد پار امریکہ اور نیٹو افواج پر حملوں میں ملوث ہیں۔


XS
SM
MD
LG