رسائی کے لنکس

’حماس کو دہشت گرد گروپوں کی فہرست سے خارج کیا جائے‘


یورپی یونین کی جانب سے 2001ء میں حماس سمیت 12 دیگر گروپوں اور 29 افراد کے نام بھی دہشت گرد گروپوں کی فہرست میں شامل کیے گئے تھے

یورپی یونین کی ایک عدالت نے فیصلہ سنایا ہے کہ فلسطینی گروپ حماس کا نام یورپی یونین کی دہشت گرد گروپوں کی فہرست سے نکال دیا جائے۔

یورپی یونین کی جنرل کورٹ نے بدھ کے روز سنائے گئے فیصلے میں کہا ہے کہ یورپی یونین نے نامناسب طور پر حماس کا نام دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں شامل کیا۔ جنرل کورٹ کے مطابق میڈیا اور انٹرنیٹ سے ملنے والی معلومات کی وجہ سے حماس کا نام دہشت گرد گروہوں کی فہرست میں شامل کیا گیا۔

یورپی یونین کی جانب سے 2001ء میں حماس سمیت 12 دیگر گروپوں اور 29 افراد کے نام بھی دہشت گرد گروپوں کی فہرست میں شامل کیے گئے تھے۔

یورپی یونین کی جنرل کورٹ کی جانب سے سنائے گئے اس فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی جا سکتی ہے۔

حماس نے یورپی یونین کی جنرل کورٹ کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔

حماس کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق، ’یہ فیصلہ ماضی میں یورپی یونین کی جانب سے کی گئی غلطی کی تصحیح ہے‘۔

دوسری طرف، اسرائیلی وزیر ِاعظم بنجمن نیتن یاہو نے اس فیصلے پر افسوس کا اظہار کرتے کہا ہے کہ، ’ہم امید کرتے ہیں کہ حماس کا نام فوری طور پر دہشت گرد گروہوں کی فہرست میں دوبارہ شامل کیا جائے گا‘۔

عدالت کا کہنا ہے کہ فلسطینی گروپ حماس کے اثاثے اگلے تین ماہ تک منجمند رہیں گے، جب تک کہ اس فیصلے کے خلاف اپیل پر بھی فیصلہ نہیں سنا دیا جاتا۔

XS
SM
MD
LG