رسائی کے لنکس

انفنٹینو نے قریب ترین حریف امیدوار اور بحرین کے شاہی خاندان کے رکن شیخ سلمان الخلیفہ سے 27 ووٹ زیادہ حاصل کیے جنہیں 'فیفا' کی صدارت کے لیے فیورٹ سمجھا جارہا تھا۔

فٹ بال کی عالمی تنظیم 'فیفا' کے ارکان نے سوئٹزرلینڈ سے تعلق رکھنے والے وکیل جیانی انفنٹینو کو تنظیم کا نیا صدر منتخب کرلیا ہے۔

انفنٹینو کا انتخاب جمعے کو سوئٹزرلینڈ کے شہر زیورخ میں واقع 'فیفا' کے صدر دفتر میں ہونے والے اجلاس میں کیا گیا جس میں تنظیم کے 209 رکن ملکوں کے نمائندے شریک ہوئے۔

انتخاب کے پہلے مرحلے میں کسی امیدوار کے واضح اکثریت حاصل نہ کرنے کے بعد دوسرا مرحلہ منعقد کیا گیا جس میں انفنٹینو نے 115 ووٹ حاصل کرکے کامیابی حاصل کی۔

انفنٹینو نے قریب ترین حریف امیدوار اور بحرین کے شاہی خاندان کے رکن شیخ سلمان الخلیفہ سے 27 ووٹ زیادہ حاصل کیے جنہیں 'فیفا' کی صدارت کے لیے فیورٹ سمجھا جارہا تھا۔

سوئٹزرلینڈ اور اٹلی کی دہری شہریت رکھنے والے انفنٹینو اس سے قبل یورپ میں فٹ بال کی منتظم تنظیم 'یوفا' کے سیکریٹری جنرل کی حیثیت سے ذمہ داریاں انجام دے رہے تھے۔

صدر منتخب ہونے کے بعد اپنے خطاب میں جیانی انفنٹینو نے 'فیفا' کی تنظیمِ نو کرنے اور دنیا میں اس کی ساکھ بحال کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

انفنٹینو کو سیپ بلاٹر کی جگہ 'فیفا' کا صدر منتخب کیا گیا ہے جنہیں بدعنوانی کے الزامات کے باعث رکن ملکوں کے دباؤ کے باعث گزشتہ سال اپنے عہدے سے مستعفی ہونا پڑا تھا۔

بعد ازاں 'فیفا' کی ضابطۂ اخلاق کمیٹی نے سیپ بلاٹر اور اور 'یوفا' کے سابق صدر مائیکل پلاٹینی پر چھ سال تک فٹ بال سے متعلق کسی بھی سرگرمی میں حصہ لینے پر پابندی عائد کردی تھی جس کے خلاف دونوں رہنماؤں نےاپیل دائر کر رکھی ہے۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق سوئٹزرلینڈ سے قانون کی تعلیم حاصل کرنے والے 'فیفا' کے نومنتخب صدر کو پانچ زبانوں – اطالوی، فرانسیسی، جرمن، انگریزی اور ہسپانوی – پر عبور حاصل ہے۔

انہوں نے اگست 2000ء میں 'یوفا' میں شمولیت اختیار کی تھی جس کے بعد وہ مختلف عہدوں پر خدمات انجام دیتے ہوئے بتدریج ترقی کرنے کےبعد اکتوبر 2009ء میں تنظیم کے سیکریٹری جنرل کے عہدے تک پہنچے۔

انتخابی عمل سے چند گھنٹے قبل 'فیفا' کے اجلاس میں رکن ملکوں نے کئی اہم اصلاحات کی بھی منظوری دی جس کا مقصد تنظیم اور بین الاقوامی فٹ بال کے معاملات میں شفافیت لانا اور تنظیم پر شائقین فٹ بال کا اعتماد بحال کرنا ہے۔

نئی اصلاحات کے تحت 'فیفا' کے فیصلہ ساز ادارے ایگزیکٹو کمیٹی کی جگہ ایک منتخب کونسل قائم کی جائے گی جس میں خواتین کو زیادہ نمائندگی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ دنیا میں ویمن فٹ بال کو فروغ مل سکے۔

نئی منظور کردہ اصلاحات کے تحت 'فیفا' کے تمام اعلیٰ عہدیداران کی تنخواہیں اب خفیہ نہیں رکھی جائیں گی جب کہ کوئی بھی شخص تنظیم کے صدر کے عہدے پر زیادہ سے زیادہ 12 برس تک فائز رہ سکے گا۔

XS
SM
MD
LG