رسائی کے لنکس

ٹھٹھہ کے متاثرین نے گھروں کو لوٹنا شروع کر دیا


پیر کوٹھٹھہ کے ہزاروں متاثرین نے اپنے گھروں کو لوٹنا شروع کر دیا ۔ان میں سے بہت سے افراد نے کئی روز تک شہر کے باہر پہاڑی پر ایک قبرستان میں بسیرا کر رکھا تھا۔

پاکستان کےجنوبی علاقوں میں سیلاب کےپانی میں کمی آنا شروع ہو گئی ہےاور سندھ کے کچھ شہروں میں متاثرہ افراد نے اپنے گھروں کو لوٹنا شروع کر دیا ہے ۔

پیر کوٹھٹھہ کے ہزاروں متاثرین نے اپنے گھروں کو لوٹنا شروع کر دیا ۔ان میں سے بہت سے افراد نے کئی روز تک شہر کے باہر پہاڑی پر ایک قبرستان میں بسیرا کر رکھا تھا۔

ٹھٹھہ کی تین لاکھ آبادی میں سے بیشتر نےپچھلے ہفتے کے دوران اس وقت شہر چھوڑ دیا تھا جب قریبی شہرسجاول میں سیلاب آگیا تھا اور پانی کا بہاؤ ٹھٹھہ کی طرف ہو گیا تھا۔ گزشتہ چند روز میں ہنگامی امداد فراہم کرنے والی ٹیمیں شہر کے گرد پشتوں کو محفوظ بنانے میں مصروف رہی ہیں ۔

اب جب سیلاب کا پانی کم ہوتا جا رہا ہے تو سندھ میں سیلاب کی صورتحال پر نظر رکھنے والے حکام کا کہنا ہے کہ آئیندہ دنوں میں سیلاب کا خطرہ کم ہوتا جائے گا۔ تاہم حکام اور امدادی ادارے لاکھوں متاثرین کو خوراک ، پینے کا پانی اور ضرورت کی دوسری اشیا پہنچانے کی بھر پور کو شش کر رہے ہیں۔ وہ پانی اور خوراک کی کمی سے پیدا ہونے والی بیماریوں جن سے بچے زیادہ متاثر ہیں سے نمٹنے کے لئے اقدامات کر رہے ہیں۔

امریکی سینیٹر جان کیری نے اپنے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ دنیا پاکستان میں سیلاب کے چیلنج سے نمٹنے کے لئے اتنا کچھ نہیں کر رہی جتنی اس کو ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ کے خوراک کے عالمی ادارے کے ڈائریکٹر منگل کو پاکستان کا دورہ کر رہے ہیں جہاں وہ متاثرین کی خوراک کی ضروریات کا جائزہ لیں گے۔ ورلڈ فوڈ پروگرام نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ تقریباً آٹھ لاکھ متاثرین تک خوراک پہنچانے کے لئے اسے مزید ہیلی کاپٹر درکار ہیں۔

XS
SM
MD
LG