رسائی کے لنکس

رحیم یار خان: دھماکوں سے پنجاب میں گیس سپلائی میں خلل


فائل فوٹو

فائل فوٹو

سوئی ناردرن کے منتظم اعلیٰ نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ دھماکوں سے تین گیس پائپ لائنز متاثر ہوئیں اور مرمت کے کام میں 24 سے 36 گھنٹے لگ سکتے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر رحیم یار خان میں اتوار کی رات دھماکے ہوئے، جن کے نتیجے میں تین گیس پائپ لائینوں میں آگ بھڑک اٹھی۔

اِن دھماکوں کے بعد، پنجاب کے بیشتر شہروں کو گیس کی فراہمی بھی متاثر ہوئی۔ ان لائینوں سے رحیم یارخان، ملتان، بہاولپور، لاہور اور فیصل آباد کو گیس فراہم کی جاتی ہے۔ صوبہ سندھ اور بلوچستان سے آنے والی یہ تینوں گیس پائپ لائنیں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ دھماکوں میں ایک خاتون ہلاک، جب کہ قریب موجود کئی مویشی بھی ہلاک ہو گئے۔

سوئی ناردرن ذرائع کے مطابق، گیس پائپ لائینوں میں دھماکوں سے تباہی دہشتگردی کا واقعہ ہے، جن میں ’انتہائی منصوبہ بندی کے ساتھ‘ گیس کی تین پائپ لائینوں کو اڑایا گیا ہے۔ تباہ ہونے والی گیس لائنیں 16، 18 اور 24 انچ قطر کی بتائی جاتی ہیں۔

ادھر، ’ڈی پی او‘ رحیم یار خان کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ نامعلوم افراد نے گیس کی پائپ لائینوں کو دھماکا خیز مواد سے تباہ کیا۔ جب کہ پائپ لائینوں سے گیس کے اخراج کے باعث آگ پر قابو پانے کے کام میں مشکلات پیش آ رہی ہیں۔

سوئی ناردرن کے منتظم اعلیٰ نے میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ ملک میں گیس کا پریشر انتہائی کم ہو گیا ہے اور لائینوں کی مرمت کے کام میں 24 سے 36 گھنٹے لگ سکتے ہیں۔

دھماکوں کے بعد، اطراف کی بستیاں خالی کرا لی گئیں، جس کے نتیجے میں، علاقہ مکینوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔
XS
SM
MD
LG