رسائی کے لنکس

خیبر پختونخوا: حقوقِ نسواں کے لیے سرگرم ادارے کے لیے بین الاقوامی ایوارڈ

  • نیلوفر مغل

فائل

فائل

ایوارڈ کا مقصد خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کے لیے سرگرم ان مقامی تنظیموں کی مدد کرنا اور انہیں مزید مضبوط بنانا ہے جن کی قیادت خود خواتین کے پاس ہے

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا میں لڑکیوں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی ایک تنظیم 'اویئر گرلز' نے اس ہفتے لندن میں ایک عالمی ایوارڈ حاصل کیا ہے۔

ادارے کی سربراہ اور خواتین کے حقوق کے لیے سرگرم گلالئی اسمعیل نے وائس آف امریکہ سے گفتگو میں بتایا کہ 'ود اینڈ فار گرلز ایوارڈ' دنیا کے 19 مختلف ملکوں میں کام کرنے والے 20 تنظیموں کو دیا گیا ہے جن میں ان کا ادارہ بھی شامل ہے۔

اس ایوارڈ کا مقصد خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کے لیے سرگرم ان مقامی تنظیموں کی مدد کرنا اور انہیں مزید مضبوط بنانا ہے جن کی قیادت خود خواتین کے پاس ہے۔

'اویئر گرلز' نامی ادارہ 2002ء میں قائم کی گئی تھی جس کا مقصد ایک ایسا پلیٹ فارم بنانا تھا جہاں سے خیبر پختونخوا کی خواتین اور لڑکیاں اپنے حقوق کے بارے میں آگاہی حاصل کر سکیں اور اپنے حقوق کے لیے لڑسکیں ۔

گلالئی اسمعیل نے جب یہ ادارہ قائم کیا تو ان کی عمر اس وقت صرف 16 برس تھا۔ گلالئی کا مکمل انٹرویو ذیل میں سماعت فرمائیے:


XS
SM
MD
LG