رسائی کے لنکس

امریکہ نےحقانی نیٹ ورک کے کمانڈر عبدالعزیز اباسین پر پابندی عائد کردی


امریکہ نےحقانی نیٹ ورک کے کمانڈر عبدالعزیز اباسین پر پابندی عائد کردی

امریکہ نےحقانی نیٹ ورک کے کمانڈر عبدالعزیز اباسین پر پابندی عائد کردی

امریکی محکمہ خزانہ کی جانب سے حقانی نیٹ ورک کے اہم کمانڈر عبدالعزیز اباسین سمیت اسی تنظیم کے دیگرپانچ افراد پر پابندیاں عائد کر دی ہیں جبکہ ان افراد کے تمام اثاثے بھی منجمد کر دئیے گئے ہیں۔ ان پر طالبان کے لئے مالی وسائل فراہم کرنے اور مختلف کارروائیوں میں دہشت گرد تنظیموں کی مدد کرنے کے الزامات عائد کئے گئے ہیں۔

پانچ افراد میں سے دو کا تعلق افغانستان سے ہے اور ان کے نام حاجی فیض اللہ خان نورزئی اور حاجی ملک نورزئی ہیں۔ تیسرا شخص پاکستانی ہے اور اس کا نام عبدالرحمن بتایا گیاہے۔ عبدالرحمن کراچی میں ایک دینی مدرسہ چلا تا ہے جبکہ اس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ وہ طالبان و القاعدہ کو لاجسٹک اور فنانشل مدد بھی فراہم کرتا ہے۔

محکمہ خزانہ کے ترجمان ڈیوڈ کوہن کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ عبدالعزیز اباسین افغانستان کے صوبہ پکتیکا کا شیڈو گورنر ہے اور اورزگان ضلع میں طالبان کے ایک گروپ کی کمان کرر ہا ہے۔ کمانڈر عبدالعزیز اباسین افغانستان میں طالبان کو مالی معاونت فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ تربیتی کیمپ بھی چلارہا ہے ۔

پابندیوں کی زد میں آنے والا پانچواں شخص فضل الرحمن ہے جس پر القاعدہ اور اسلامک موومنٹ آف ازبکستان کو مالی وسائل فراہم کرنے کا الزام ہے۔

امریکی وزارت خزانہ کے مطابق عبدالرحمن نے غیر ملکی دہشت گردوں کو تربیت فراہم کرنے کیلئے پاکستان لانے میں مدد فراہم کی۔ وزارت خزانہ کے مطابق ان مالی معاونین اور تعاون کرنے والوں نے طالبان القاعدہ کو تیل کی فراہمی بھی یقینی بنائی ۔

ڈیوڈ کوہن کے بیان میں کہا گیا ہے کہ حقانی نیٹ ورک دنیا کا انتہائی خطرناک دہشت گروپ ہے جو افغانستان اور پاکستان میں سرگرم عمل ہے۔سراج الدین حقانی نیٹ ورک کا سربراہ ہے ۔ اس پرمتعدد اہم شخصیات پر حملوں کے بھی الزامات ہیں۔

XS
SM
MD
LG