رسائی کے لنکس

پاکستان میں بے گھر ہونے والوں کی مدد کے لیے مزید رقم چاہئیے: اقوامِ متحدہ


اقوامِ متحدہ نے کہا ہے کہ اُسے پاکستان میں مسلح تنازعات میں بے گھر ہونے والے ہزاروں لوگوں کی مدد کے لیے مزید فنڈز کی ضرورت ہے۔

پاکستانی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ ملک کے شمال مغرب میں وادی سوات سے پچھلے سال جو 20 لاکھ سے زیادہ لوگ نکل گئے تھے، اُن میں سے تقریباً 90 فیصد لوگ اپنے گھروں کو لَوٹ چُکے ہیں۔ پناہ گزینوں کے لیے اقوامِ متحدہ کے ہائى کمیشن یا یو این ایچ سی آر نے کہا ہے کہ اُسے واپس آنے والے لوگوں کی مدد کے لیے 17 کروڑ 60 لاکھ ڈالر کی ضرورت ہے اور اس رقم میں سے اُسے ابھی تک صرف تین کروڑ 50لاکھ ڈالر موصول ہوئے ہیں۔

یو این ایچ سی آر نے کہا ہےکہ یہ بحران ابھی ختم نہیں ہوا ہے ۔ پاکستان کے قبائیلی علاقوں میں 13 لاکھ سے زیادہ لوگ بدستور بے گھر ہیں اور وہ بہت سے لوگ جو واپس آچکے ہیں، وہ بھی ابھی تک اپنی معمول کی زندگی بحال کرنے کی تگ ودو میں ہیں۔ ہائى کمیشن نے نومبر کے بعد سے 30 ہزار سے زیادہ لوگوں کی مدد کی ہے۔

اگلے ہفتے اس علاقے میں طالبان اور القاعدہ سے وابستہ جنگجوؤں کے خلاف پاکستانی مسلح افواج کی کارروائى کے آغاز کی پہلی سالگرہ ہوگی۔

XS
SM
MD
LG