رسائی کے لنکس

صحت عامہ پر ریپبلیکن بِل ایوان نمائندگان سے منظور


Rep. Raul Labrador (2nd from L) and members of the House of Representatives leave after the Republican-controlled House voted to let insurance companies sell individual health coverage to all comers, even if it falls short of required standards in "Obamac

Rep. Raul Labrador (2nd from L) and members of the House of Representatives leave after the Republican-controlled House voted to let insurance companies sell individual health coverage to all comers, even if it falls short of required standards in "Obamac

حزب اختلاف کی اِس قانون سازی کو 39ڈیموکریٹس کی حمایت ملی۔ دوسری طرف، ایوانِ نمائندگان میں ڈیموکریٹ پارٹی کے ارکان کا کہنا ہے کہ اِس بِل کا مقصد وسیع تر قانون کو سبوتاژ کرنا تھا

انتظامیہ کے صحت عامہ کی نگہداشت کے پروگرام کی اصلاح کی کوششوں میں حکومت کو اُس وقت دھچکا پہنچا، جب جمعے کے روز ایوانِ نمائندگان میں ڈیموکریٹ پارٹی کے 39 ارکان نے ری پبلیکن پارٹی کی طرف سے پیش کردہ اُس بِل کے حق میں ووٹ دیا، جس کا مقصد صدر کی فخریہ داخلی پالیسی پیش کش کو نقصان پہنچانا ہے۔

اِس بِل کا مسودہ، مِشی گن سے تعلق رکھنے والےری پبلیکن پارٹی کے رُکن، فریڈ اُپٹن نے پیش کیا جو 157 کے مقابلے میں 261ووٹوں سے منظور کیا گیا۔

ڈیموکریٹک پارٹی کے 39ارکان نے، جو پارٹی کی مجموعی تعداد کا تقریباً پانچواں حصہ بنتا ہے، اس اقدام کی حمایت کی، جسے وفاداری کی پرکھ کی علامت بتایا جا رہا ہے۔

ڈیموکریٹ پارٹی کے متعدد ارکان کو اِس بات کا خوف ہے کہ ’ایفرڈ ایبل کیئر ایکٹ‘ کےضمن میں حکومتی ناکامی کا نتیجہ 2014ء کے انتخابات میں پارٹی کے لیے نقصان دہ نتائج لا سکتا ہے۔

ڈیموکریٹ اکثریت والے سینیٹ میں اِس بِل کا منظور ہونا ممکن نہیں ہے۔

وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ اگر اس طرح کا بِل صدر کی منظوری کے لیے پیش ہوتا ہے، تو صدر اُسے ویٹو کر دیں گے۔

وائٹ ہاؤس نے کہا ہےکہ اِس طرح کے عمل سے اب تک کی پیش رفت پر پانی پھر جائے گا، اور صحت کا بیمہ کرنے والوں کو اپنے غیر معیاری پلان بیچنے کی اجازت مل جائے گی، جِن میں صحت ِعامہ کی بنیادی ضروریات پوری نہیں ہوتیں، اور ضرورت مندوں کو خرابیِ صحت کےمعاملات میں بہت کم مالی امداد مل سکے گی۔

ایوانِ نمائندگان میں ڈیموکریٹ پارٹی کے ارکان کے بقول، اُپٹن کے بِل کا مقصد وسیع تر قانون کو سبوتاژ کرنا تھا۔

میساچیوسٹس سے تعلق رکھنے والےایوان ِنمائندگان کے رُکن، جیمز مک گورن نے کہا ہے کہ، ری پبلیکنز کو اُن چار کروڑ امریکیوں کی کوئی پرواہ نہیں، جِن کے پاس ہیلتھ انشورنس کی سہولت موجود نہیں ہے۔

اُن کے بقول، اگر آپ ایسے نظام کی طرف پلٹنا چاہتے ہیں جِس میں انشورنس کمپنیاں لوگوں سے دور بھاگیں کیونکہ وہ بیمار ہیں، تو پھر آپ ضرور اِس بِل کے حق میں ووٹ ڈالیں۔

یہ کوشش کرتے ہوئے کہ اپنی داخلی پالیسی کی سب سے بڑی کامیابی کو بچا سکیں، صدر اوباما نے جمعرات کے روز ایک پیکیج کی تجویز پیش کی ہے جس میں انشورنس کمپنیوں کو بیمہ پالیسیوں کو کم از کم ایک سال تک بڑھانے کو کہا گیا ہے، جو پالیسیاں منسوخ ہونے والی ہیں، کیونکہ 2010ء کے قانون کی رو سے یہ دی گئی کم از کم شرائط پر پوری نہیں اترتیں، جنھیں عام طور پر ’اوباما کیئر‘ کا نام دیا جاتا ہے۔
XS
SM
MD
LG