رسائی کے لنکس

بھارت: بچی سے زیادتی میں ملوث دوسرا مشتبہ شخص گرفتار


مظاہرین کی پولیس سے ہاتھا پائی

مظاہرین کی پولیس سے ہاتھا پائی

پولیس نے پیر کو بتایا کہ پہلے سے زیرحراست بائیس سالہ مشتبہ شخص نے اپنے دوسرے ساتھی کا نام بتایا جس کے بعد اُسے گرفتار کیا گیا۔

بھارت میں پولیس نے کہا کہ اُنھوں نے دارالحکومت نئی دہلی میں پانچ سالہ بچی سے جنسی زیادتی کے دوسرے مشتبہ شخص کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس نے پیر کو بتایا کہ پہلے سے زیرحراست بائیس سالہ مشتبہ شخص نے اپنے دوسرے ساتھی کا نام بتایا جس کے بعد اُسے گرفتار کیا گیا۔

پانچ سالہ بچی نئی دہلی سے 15 اپریل کو لاپتہ ہو گئی تھی اور تین دن بعد اُسے ایک بند کمرے میں پایا گیا۔ پولیس کے مطابق مشتبہ افراد بچی سے جنسی زیادتی اور تشدد کے بعد اس کمرے میں بند کر کے چلے گئے تھے۔

جس اسپتال میں اس لڑکی کا علاج کیا جا رہا ہے وہاں کہ میڈیکل سپریٹنڈنٹ نے پیر کو بتایا کہ بچی کی حالت بہتر ہو رہی ہے اور اب وہ اپنے والدین سے باتیں کر سکتی ہے۔

توقع ہے کہ اُسے مزید دو دن تک اسپتال میں زیر علاج رکھا جائے گا۔

پیر کو جب بھارتی پارلیمنٹ کا اجلاس شروع ہوا تو اس معاملے پر ایوان میں شدید احتجاج کے بعد کچھ ہی دیر بعد اجلاس کو ملتوی کر دیا گیا۔

اتوار کو نئی دہلی میں سینکڑوں مظاہرین نے دارالحکومت کے پولیس کمشنر سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا۔

مظاہروں میں شدت اُن اطلاعات کے بعد آئی جن میں کہا گیا تھا کہ پولیس نے ناصرف بچی سے جنسی زیادتی کے معاملے پر توجہ نہیں دی بلکہ اس معاملے کو دبانے کے لیے لڑکی کے والدین کو رقم دینے کی پیش کش بھی کی۔
XS
SM
MD
LG