رسائی کے لنکس

بھارتی کشمیر: پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپں


بھارتی کشمیر: پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپں

بھارتی کشمیر: پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپں

بھارتی کشمیر میں پولیس نے اُن مظاہرین کے خلاف آنسو گیس استعمال کی جو نئى دہلی میں 1996 میں بم کے حملے کے الزام میں تین عسکریت پسند کشمیریوں کو سُنائى جانے والی موت کی سزا کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔

پولیس نے پتھراؤ کرنے والے اُن مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے ڈنڈے بھی استعمال کیے جو جمعے کے روز سری نگر کی سڑکوں پرموت کے فیصلے کے خلاف اور کشمیر کی آزادی کے حق میں نعرے لگا رہے تھے۔

جھڑپوں میں کم سے کم سات افراد زخمی ہوئے اور ان میں ایک ایسا آدمی بھی شامل ہے، جس کے بارے میں عینی شاہدوں کا کہنا ہے کہ وہ پولیس کی گولی سے زخمی ہوا ہے۔ پولیس نے ایک علحدگی پسند لیڈر سمیت چار افراد کو حراست میں لے لیا۔

سری نگر میں جمعے کے روز دکانیں اور سکول بند ہوگئے اور سڑکوں پر ٹریفک بھی بہت کم رہ گیا۔

بھارت کی ایک عدالت کی جانب سے 1996 میں نئى دہلی میں بم کے ایک دھماکے کے الزام میں تین کشمیری جنگجوؤں کو موت کی سزا سُنائے جانے کے بعد بھارتی کشمیر میں علحدگی پسند لیڈروں نے ہڑتال کی اپیل کی تھی۔ نئ دہلی کی ایک مارکیٹ میں بم کے اُس حملے میں 13 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

سزا پانے والے تینوں آدمی جموں و کشمیر اسلامی محاذ کے رُکن بتائے گئے ہیں۔

عدالت نے ایک اور جنگجو کو عمر قید کی سزا دی ہے جبکہ باقی دو کو نسبتاً ہلکی سزائیں سُنائى ہیں۔

کشمیر کے متنازع علاقے کے بھارتی حصّے میں مختلف علحدگی پسند تنظیمیں بھارت سے آزادی یا مسلم اکثریت کے پاکستان کے ساتھ الحاق کے لیے کئى عشروں سے لڑ رہی ہیں۔ان لڑائیوں میں ہزاروں لوگ ہلاک ہوچکے ہیں۔

XS
SM
MD
LG