رسائی کے لنکس

جوہری توانائی ایجنسی خود مختار نہیں بلکہ امریکہ اور اتحادیوں کے زیرِ اثر ہے: خامنئی


ایران یورینیم کی مزید افزدوگی کے لئے اسے روس اور فرانس بھیجنے سے انکاری ہے۔

آیت اللہ علی خامنئی نے کہا ہے کہ امریکہ اور اس کے مغربی اتحادی، جوہری توانائی ایجنسی، آئی اے ای اے کے اس نظریے کے پیچھے کارفرما ہیں کہ ایران جوہری ہتھیار بنا رہا ہے۔

اتوار کے روز سرکار ٹیلی ویژن سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہ کہ آئی اے ای اے خود مختار ادارہ نہیں ہے اور بڑی آسانی سے امریکہ کی باتوں میں آجاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ، برطانیہ اور اسرائیل ہمیشہ اس کوشش میں رہتے ہیں کہ کوئی نہ کوئی ایسا تنازع کھڑا کرتے رہیں جس سے ایران پر الزامات عائد کیے جا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ ایران محض شہری مقاصد کے لئے کام کر رہا ہے۔

آئی اے ای اے میں پیر کے روز سے گفت وشنید شروع ہو رہی ہے جس میں ایران کے بارے میں ان کی تازہ ترین رپورٹ زیرِ بحث آئے گی۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہو سکتا ہے ایران میزائل بنانے کی کوشش کر رہا ہو۔

ایران نے اقوام متحدہ کی ثالثی میں دی جانے والی اس پیشکش کو مسترد کر دیا ہے کہ اس کے زیادہ تر یورینیم کو مزید نکھارنے کے لیے روس اور فرانس بھیجا جائے۔

XS
SM
MD
LG