رسائی کے لنکس

دونوں امریکیوں کو اپنی بے گناہی ثابت کرنا ہوگی، ایرانی صدر


ایرانی صدر محمود احمدی نژاد نے کہا ہے کہ اُن کے ملک میں قید دو امریکی شہریوں کو یہ ثابت کرنا ہو گا کہ وہ ایران میں کوئی جرم کرنے کی غرض سے داخل نہیں ہوئے تھے۔ ایرانی صدر نے امریکی ٹیلی ویژن این بی سی کو بتایا کہ وہ اس مقدمے میں مداخلت نہیں کریں گے اورجیل میں قید ان امریکیوں کی قسمت کا فیصلہ عدالت کرے گی۔

تین امریکی شہریوں کو جولائی 2009ء میں جاسوسی کے الزام میں ایران میں گرفتار کیا گیا تھا۔ تاہم ان کا کہنا ہے کہ وہ عراق میں ہائیکنگ کے دوران غلطی سے ایران میں داخل ہوئے تھے۔

شان بوئر اور جوش فتل اب بھی ایران کی قید میں ہیں جب کہ اُن کی خاتون ساتھی سارہ شوراڈ کو تقریباً ایک سال حراست میں رکھنے کے بعد پانچ لاکھ ڈالر کی ضمانت کے عوض رواں ہفتے رہا کر دیا گیا تھا۔ سارہ اب طبی معائنے کے لیے اب عمان میں ہیں۔

سارہ کی والدہ نے اپنی بیٹی کے رہائی کی اپیل کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ بیمار ہے۔ صدر احمدی نژاد نے کہا کہ امریکی خاتون کو رہائی ہمدردی کی بنیاد پر کی گئی ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان پی جے کراؤلی نے بدھ کے روز کہا کہ اگر ایران ایک خاتون ہائیکر کو رہا کر سکتا ہے تو وہ دو مرد امریکی شہریوں کو بھی رہا کرسکتا ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ ایسا کرکے ایرانی صدر محمو د احمدی نژاد ایک اہم پیغام دے سکتے ہیں۔

XS
SM
MD
LG