رسائی کے لنکس

ایران کے لیڈر خود اپنی تباہی کے بیج بو رہے ہیں: بائیڈن


موسوی کا کہنا ہے کہ موجودہ حکومت نے غیرجانبدار ذرائع ابلاغ کی زبان بند کردی ہے، جیلوں کو حزبِ اختلاف کے کارکنوں سے بھر دیا ہے اور بقول اُن کے، پُر امن احتجاجی مظاہرین کو وحشیانہ طریقے سے ہلاک کیا ہے

امریکہ کے نائب صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ ایران کے لیڈر ملک کی حزب ِ اختلاف کو کچلنے کی مہم کو جاری رکھتے ہوئے خود اپنی تباہی کے بیج بو رہے ہیں۔

بائیڈن نے کہا ہے کہ ایران کی قیادت کی جانب سے حزبِ اختلاف کے احتجاجی مظاہروں کو ختم کرنے کے لیے طاقت کے استعمال نے ایران میں اور پورے خطے میں اس قیادت کے اعتبار کو ختم کر دیا ہے۔

انہوں نے امریکی ٹیلی ویژن نیٹ ورک ایم ایس این بی سی کو انٹرویو دیتے ہوئے یہ بات کہی ہے۔ بائیڈن نے یہ بھی کہا ہے کہ واشنگٹن، ایران کے خلاف مزید پابندیان عائد کرنے کی جانب قدم بڑھا رہا ہے۔

ایرانی حزبِ اختلاف کے لیڈر میر حسین موسوی نے بھی ملک کی قدامت پسند قیادت پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایران کے اسلامی انقلاب کے مقاصدکو پورا کرنے میں ناکام ہو گئى ہے۔

اصلاحات کے حامی موسوی نے منگل کے روز اپنی وَیب سائیٹ ”کلمہ ڈاٹ کام “ پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ قبل از انقلاب بادشاہت کے نظام کی ” آمریت اور استبداد کی جڑیں“ ابھی ایران میں باقی ہیں۔

موسوی نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے غیرجانبدار ذرائع ابلاغ کی زبان بند کردی ہے، جیلوں کو حزبِ اختلاف کے کارکنوں سے بھر دیا ہے اور بقول اُن کے، پُر امن احتجاجی مظاہرین کو وحشیانہ طریقے سے ہلاک کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ان کارروائیوں کے نتیجے میں وہ اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ 1979 کے اسلامی انقلاب کے مقاصد پورے نہیں ہوئے۔

ایرانی عدلیہ کے ایک سینئر عہدے دار نے منگل کے روز کہا ہے کہ ایران جلد ہی ایسے نو نظریاتی مخالفین کو موت کی سزا دے دے گا جو گذشتہ جون کے متنازع صدارتی انتخاب کے خلاف ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں ملوّث تھے۔ موسوی نے اپنی وَیب سائٹ پر کہا ہے کہ وہ ” ایران کی عدلیہ سے پوری طرح مایوس“ ہوگئے ہیں۔

XS
SM
MD
LG