رسائی کے لنکس

عراقی پارلیمنٹ میں بموں کے ناقص کھوجی آلے کی چھان بین کا مطالبہ


عراقی پارلیمنٹ میں بموں کے ناقص کھوجی آلے کی چھان بین کا مطالبہ

عراقی پارلیمنٹ میں بموں کے ناقص کھوجی آلے کی چھان بین کا مطالبہ


عراقی پارلیمنٹ کے ارکان نےبرطانیہ میں بنے ہوئے بموں کا سُراغ لگانے والے اُس آلے کے ملک میں وسیع استعمال کے بارے میں کسی چھان بین کا مطالبہ کیا ہے، جس کے بارے میں لندن کا کہنا ہے کہ یہ آلہ کام نہیں کرتا۔

عراقی پالیمنٹ کے ارکان چاہتے کہ کوئى کمیٹی اس معاملے کا جائزہ لے اور اس بارے میں کوئى فیصلہ کرے کہ آیا عراق کو وہ رقم واپس مل سکتی ہے جو بموں کے کھوجی آلات کی خریداری پرخرچ ہوچکی ہے۔

اے ڈی ای 651 نامی ایک دستی آلے کی قیمت کم سے کم 16 ہزار ڈالر ہے۔ اور عراقی پولیس اور فوج کے ارکان ملک کے طول و عرض میں چانچ پڑتال کی چوکیوں پر یہ کھوجی آلات استعمال کرتے رہے ہیں۔برطانوی کمپنی اے ٹی ایس سی کے بنائے ہوئے اس آلے میں ایک ایسا اینٹنا لگا ہوا ہے جوکمپنی کے دعوے کے مطابق اُس وقت حرکت کر نے لگتا ہے ، جب وہ آلہ کسی دھماکا خیز مواد کے قریب ہو۔

عراقی سکیورٹی فورسز میں کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ آلہ کام تو کرتا ہے ۔ لیکن اس کے لیے ضروری ہے کہ اسے استعمال کرنے والے نے مناسب تربیت حاصل کی ہو۔

اُدھر برطانیہ میں حکومت نے جو ٹسٹ کیے ہیں ، اُن سے پتا چلا کہ بموں کا سُراغ لگانے کے لیے اس آلے پر بھروسا نہیں کیا جاسکتا۔چنانچہ برطانوی حکام نے عراق اور افغانستان کو ان آلات کی برآمد بند کردی ہے اور پولیس نے کسی فراڈ کی چھان بین کرنے کے لیے اے ٹی ایس سی کے منیجنگ ڈائریکٹر کو حراست میں لے لیا ہے۔

XS
SM
MD
LG