رسائی کے لنکس

اسرائیلی آبادکاری منجمد کرنے کی میعاد میں توسیع کی جائے: اوباما


امریکی صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ اُنھوں نے اسرائیلی وزیرِ اعظم بینجمن نتن یاہو پر زور دیا ہے کہ اُن کی حکومت کی طرف سے مغربی کنارے میں بستیوں کی تعمیر کو منجمد کرنے کی میعاد میں توسیع کی جائے تاکہ حال ہی میں فلسطینیوں کے ساتھ جاری ہونے والے امن مذاکرات کی کامیابی کے امکانات کو روشن کیا جاسکے۔

جمعے کے روز وائٹ ہاؤس میں ہونے والی نیوز کانفرنس میں مسٹر اوباما نے اِس بات کوتسلیم کیا کہ یہ معاملہ سیاسی طور پرمشکل ہو سکتا ہے کیونکہ مسٹر نتن یاہو کے اتحاد کے کچھ لوگ میعاد میں توسیع کے خلاف ہیں۔ لیکن، اُن کا کہنا تھا کہ اگر گفتگو آگے بڑھ رہی ہے تو یہ بات سمجھ میں آنے والی ہے کہ اِس جزوی پابندی کی میعاد کو آگےبڑھایا جائے۔

یہ پابندی 26ستمبر کو ختم ہورہی ہے۔ فلسطینیوں نے دھمکی دی ہے کہ اگر پابندی اُٹھالی جاتی ہے تو وہ مذاکرات سے باہر چلے جائیں گے۔

مسٹر نتن یاہو اور فلسطینی صدر محمود عباس نے گذشتہ ہفتے مسٹر اوباما سے ملاقات کی تھی۔ وزیرِ خارجہ ہلری کلنٹن منگل اور بدھ کو مصر کے شہر شرم الشیخ اوریروشلم میں بات چیت کے اگلےمرحلے میں شرکت کے لیے مشرقِ وسطیٰ کے دورے پر روانہ ہورہی ہیں۔

مسٹر اوباما نے کہا کہ اُن کے خیال میں مسٹر عباس نے امن مذاکرات کو جاری کرنے پر اِس لیے اتفاق کیا کیونکہ اُنھیں احساس ہے کہ فلسطینی ریاست کے قیام کا موقع ہاتھوں سے جارہا ہے۔ اور، اُنھوں نے کہا کہ اسرائیل فلسطینی تنازع کے خاتمے سے مشرقِ وسطیٰ کے اسٹریٹجک منظرنامے میں تبدیلی واقع ہونے کا امکان ہے، جس بات سے دہشت گردی کی روک تھام اور امریکہ کی حفاظت کے مقصد میں مددملے گی۔

جیسا کہ صدر نے کہا، یہ ایسی بات ہے جو ہمارے مفاد میں ہے۔ لیکن اُنھوں نے تسلیم کیا کہ ایک سال کے اندر اندر امن سمجھوتے تک پہنچنے کی راہ میں بے انتہا مشکلات حائل ہیں۔

XS
SM
MD
LG