رسائی کے لنکس

مذاکرات کے نتیجے پر قومی ریفرنڈم ہوگا: اسرائیلی وزیراعظم


بنجمن نتن یاہو نے اپنے وزراء کو بتایا کہ یہ عمل آسان نہیں ہوگا لیکن ان کے بقول اسرائیل کا رویہ اس میں مثبت رہے گا۔ انھوں نے توقع ظاہر کی کہ بات چیت قابل عمل اور ذمہ دارانہ انداز میں کی جائے گی۔

اسرائیل کے وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے اپنی کابینہ کو یقین دلایا ہے کہ فلسطین کے ساتھ مذاکرات کی بحالی کا جو بھی نتیجہ نکلے گا اس پر قومی سطح پر ریفرنڈم کروایا جائے گا۔

اتوار کو ان کا یہ بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب امریکہ کی کوششوں سے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان عرصے سے تعطل کے شکار مذاکراتی عمل کی بحالی پر اتفاق ہوا ہے۔

مسٹر نتن یاہو نے اپنے وزراء کو بتایا کہ یہ عمل آسان نہیں ہوگا لیکن ان کے بقول اسرائیل کا رویہ اس میں مثبت رہے گا۔ انھوں نے توقع ظاہر کی کہ بات چیت قابل عمل اور ذمہ دارانہ انداز میں کی جائے گی۔

اسرائیل اور فلسطین کے درمیان 2010ء میں براہ راست مذاکرات کا عمل رک گیا تھا۔ فریقین ے درمیان سرحدوں، پناہ گرزین، سلامتی، یہودی آباد کاری اور یروشلیم کے معاملات مشکلات کا باعث ہیں۔

امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے گزشتہ جمعہ کو کہا تھا کہ ابھی مذاکرات کی بحالی کے لیے بہت سی تفصیلات طے ہونا باقی ہیں اور اگر یہ سب طے ہو جاتا ہے تو فلسطینی اور اسرائیلی حکام آئندہ ایک دو ہفتوں میں ابتدائی بات چیت کے لیے واشنگٹن آئیں گے۔

اسرائیل حکام نے ایک روز قبل کہا تھا کہ بات چیت کے عمل کی بحالی پر اتفاق کے بعد ’’محدود‘‘ تعداد میں فلسطینی قیدیوں کو رہا کرنے پر رضا مندی ظاہر کی تھی۔ تاہم اس کی تفصیلات نہیں بتائی گئیں۔
XS
SM
MD
LG