رسائی کے لنکس

شنزو ابی جاپان کے نئے وزیراعظم منتخب


شنزو ابی وزیراعظم منتخب ہونے پر ایوان کا شکریہ ادا کررہے ہیں

شنزو ابی وزیراعظم منتخب ہونے پر ایوان کا شکریہ ادا کررہے ہیں

مسٹر ابی نے انتخابات میں آسان نگران پالیسی اور عوامی فلاح پر زیادہ اخراجات کیے جانے کے وعدوں کے ساتھ کامیابی حاصل کی تھی۔

جاپان میں پارلیمان کے ایوان زیریں نے شنزو ابی کو نئی حکومت بنانے کے لیے بدھ کو بھاری اکثریت سے کامیاب کیا ہے۔

لبرل ڈیموکریٹک پارٹی (ایل پی ڈی) سے تعلق رکھنے والے شنزو ابی کی جماعت نے دس روز قبل ہونے والے انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی آف جاپان (ڈی پی جے) کو بری طرح شکست دی تھی۔

مسٹر ابی کی جماعت جنگ عظیم دوئم کے بعد سے جاپان میں حکمران رہی ہے۔ تین سال قبل اس کی جگہ ڈیموکریٹک پارٹی آف جاپان اقتدار میں آئی تھی۔

مسٹر ابی نے انتخابات میں آسان نگران پالیسی اور عوامی فلاح پر زیادہ اخراجات کیے جانے کے وعدوں کے ساتھ کامیابی حاصل کی تھی۔ انھوں نے بحرالکاہل میں تنازعات پر چین کے خلاف سخت ترین موقف اپنانے کے عزم کا بھی اظہار کیا تھا۔

یوشی کو نوڈا کی جگہ لینے والے شنزو ابی چھ سالوں میں جاپان کے ساتویں وزیراعظم ہیں۔ انھوں نے 2006ء میں وزارت عظمیٰ کا قلمدان سنبھالا تھا مگر ایک سال کے بعد ہی خرابی صحت کے باعث انھوں نے یہ عہدہ چھوڑ دیا تھا۔

توقع ظاہر کی جارہی ہے کہ مسٹر ابی ایک سابق وزیراعظم تارو آسو کو وزیر خزانہ نامزد کریں گے جب کہ سابق جزیرہ اوکیناوا سے متعلق معاملات کے سابق وزیر فومیو کشیڈا کی بطور وزیرخارجہ تقرری متوقع ہے۔

جاپان کے ایوان زیریں کی 430 نشستوں میں سے ایل پی ڈی نے 293 نشستیں حاصل کی تھیں جب کہ اس کی اتحادی جماعت نیو کومیٹو کے پاس 31 نشستیں ہیں۔ ڈی پی جے کو نسبتاً کم اختیارات والے ایوان بالا میں اکثریت حاصل ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ مسٹر ابی آئندہ سال ایوان بالا کے انتخابات کے تناظر میں اپنی زیادہ تر توجہ اقتصادی ترقی کو تیز تر کرنے کی کوششوں پر مرکوز رکھیں گے۔
XS
SM
MD
LG