رسائی کے لنکس

قندھار میں بڑی فوجی کارروائى شروع ہوگئى: امریکی کمانڈر


قندھار میں بڑی فوجی کارروائى شروع ہوگئى: امریکی کمانڈر

قندھار میں بڑی فوجی کارروائى شروع ہوگئى: امریکی کمانڈر

قندھار آپریشن میں کارروائى کا بڑا فوجی مرحلہ اُتنا ڈرامائى نہیں ہوگا جتنا کہ پچھلے مہینے صوبہ ہلمند کے شہر مارجہ پر کیا جانے والا حملہ تھا: میک کرسٹل

افغانستان میں امریکہ اور نیٹو کی فوجوں کے کمانڈر نے کہا ہے کہ طالبان کے مضبوط ٹھکانے صوبہ قندھار پر افغان حکومت کے کنٹرول کو بحال کرنے کی کوششیں پہلے ہی شروع ہوچکی ہیں اور کئى ماہ تک جاری رہیں گی۔

جنرل سٹینلی میک کِرسٹل نے بدھ کے روز ٹیلی فون پر نامہ نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ قندھار آپریشن میں کارروائى کا بڑا فوجی مرحلہ اُتنا ڈرامائى نہیں ہوگا جتنا کہ پچھلے مہینے صوبہ ہلمند کے شہر مارجہ پر کیا جانے والا حملہ تھا۔

میک کرسٹل نے کہا ہے کہ اہم سڑکوں اور قندھار شہر کے اطراف کے علاقوں کو بتدریج کنٹرول میں لینے اور محفوظ بنانے کا کام پہلے ہی شروع ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ توقع ہے کہ طالبان جنوب میں اتحاد کی فوجوں کے منصوبوں کو ناکام بنانے کے لیے اِس موسمِ گرما میں از سرِ نو کوئى کوشش کریں گے ۔اور فوجی دستے اُس کے لیے بھی ابھی سے تیاری کررہے ہیں۔

جنرل نے کہا ہے کہ نصب العین یہ ہے کہ مقامی افغان لوگوں کو یہ باور کرایا جائے کہ اتحاد اور انجام کار افغان حکومت اُن کی ضرورتوں کو پورا کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہا بعض شکّی مزاج مقامی لوگوں کو یہ یقین دلانے میں مہینے یا کئى سال لگ سکتے ہیں۔

منگل کے روز افغانستان میں امریکہ کے ایک فوجی عہدے دار نے کہا تھا کہ ملک میں اتحاد کی فوجیں جلد ایک ایسی بڑی تنظیمِ نو کے مرحلے سے گزریں گی، جس میں امریکہ کی تقریباً تمام فوجوں کو نیٹو کی کمان کے تحت کردیا جائے گا۔

افغانستان میں فوج کے اعلیٰ ترجمان وائس ایڈ مرل گریگ سمتھ نے بروسلز میں نیٹو کے ہیڈ کوارٹر میں اس اقدام کا اعلان کیا ہے۔

XS
SM
MD
LG