رسائی کے لنکس

کراچی میں ایم کیو ایم کی ہڑتال کی اپیل غیر موثر ہوگئی


ایم کیو ایم نے تاجروں اور دکانداروں سے تجارتی مراکز و دکانیں اور ٹرانسپورٹ بند رکھنے کی اپیل کی تھی۔ لیکن، بدھ کو سارا دن کاروباری مراکز روز کی طرح کھلے رہے اور پبلک ٹرانسپورٹ بھی معمول کے مطابق چلتی رہی

کراچی... متحدہ قومی موومنٹ کے سینئر رہنما ڈاکٹر فاروق ستار کی رہائش گاہ کے محاصرے کے خلاف بدھ کے روز کال کی گئی ہڑتال غیر موثر ثابت ہوئی۔

ایم کیو ایم نے تاجروں اور دکانداروں سے تجارتی مراکز و دکانیں اور ٹرانسپورٹ بند رکھنے کی اپیل کی تھی۔ لیکن، بدھ کو سارا دن کاروباری مراکز روز کی طرح کھلے رہے اور پبلک ٹرانسپورٹ بھی معمول کے مطابق چلتی رہی۔

رینجرز کے ترجمان ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل بلال اکبر کا کہنا ہے کہ شہر کے کچھ علاقوں سے زبردستی دکانیں اور پیٹرول پمپ بند کرانے کی شکایات موصول ہوئی تھیں جن پر کارروائی کرتے ہوئے رینجرز نے صورتحال کو قابو میں کرلیا۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ جبری دکانیں بند کرانے والوں کو نہیں چھوڑیں گے۔ تاجر آزادی کے ساتھ معمول کے مطابق کاروباری مراکز کھولیں۔

مقامی میڈیا میں گردش کرتی اطلاعات کے مطابق، ایم کیو ایم کے ایک عہدیدار کو مبینہ طور پر جبری دکانیں بند کرانے، لوگوں کو دھمکی دینے اور انہیں حراساں کرنے کے الزام میں رینجرز نے حراست میں لے لیا۔

حراست میں لئے گئے شخص کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ اس کا نام رضوان ہے۔ رضوان ضلع وسطی کے علاقے گلبرگ کا یونٹ انچارج ہے۔

ادھر فاروق ستار نے الزام لگایا ہے کہ تاجروں اور مارکیٹس کی یونینز کو دھمکیاں دی گئی تھیں کہ اگر کسی نے دکان بند رکھی تو اس کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا۔

دوسری جانب، متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہمارے ساتھ ہونے والی زیادتی کے خلاف احتجاج ہمارا جمہوری حق ہے۔

XS
SM
MD
LG