رسائی کے لنکس

نوجوان مستحکم اورخوشحال پاکستان دیکھنے کے خواہشمند


نوجوان مستحکم اورخوشحال پاکستان دیکھنے کے خواہشمند

نوجوان مستحکم اورخوشحال پاکستان دیکھنے کے خواہشمند

کسی بھی ملک کا اصل سرمایہ نوجوان ہوتے ہیں جو ملت کے معمار ہونے کے ساتھ ساتھ قوموں کی تقدیر بدلنے کی اہلیت رکھتے ہیں۔ پاکستان وجود میں آنے کے بعد مسلسل مسائل کا شکار رہا ہے جو کسی دور میں کم ہوئے تو کبھی اپنی انتہا کو پہنچ گئے۔ اس ملک میں وسائل کی کبھی کمی نہیں رہی۔ مگر جو بات لمحہ فکریہ ہے وہ یہ ہے کہ نوجوانوں میں احساسِ ذمہ داری کی کمی اور مسلسل سیاسی اور معاشی بحران کے باعث بڑھتی ہوئی مایوسی۔ یہی وجہ ہے کہ نوجوانوں کی اکثریت ملک سے باہر جانے کی خواہش مند ہے۔ لیکن ایسے نوجوان بھی ہیں جو ان مشکل حالات میں وسائل ہونے کے باوجود بھی یہیں ہیں اوروہ استحکام کے ساتھ ساتھ ملک کے وسائل ملک میں ہی دیکھنے کے خواہش مند ہیں۔

Thespianz Theaters بھی ایسے ہی نوجوانوں پر مشتمل ہے جو تھیٹر سے معاشرے کی اصلاح اور تفریح فراہم کرکے نوجوانوں کی سوچ کو درست سمت دے کر ان کو اپنی ذمہ داریوں کا احساس دلانے پر یقین رکھتے ہیں۔ حال ہی میں کراچی میں اس گروپ کی جانب سے ” ایسٹ اور ویسٹ ہوم از دا بیسٹ “ کے نام سے ایک کھیل پیش کیا گیا۔ یہ کہانی ایک امیر نوجوان اشرف کے گرد گھومتی ہے جو مشکل حالات سے گھبرا کراپنا ملک چھوڑنا چاہتا ہے مگر اس کے ”باوٴجی“ او ر اس کا دوست خرم پاکستان سے محبت کرتے ہیں اور اس کی مایوس سوچوں کی دلائل کے ساتھ نفی کرکے اسے ملک میں رہ کر یہاں کے حالات بدلنے میں اپنا کردار ادا کرنے پر آمادہ کر لیتے ہیں۔

فیصل ملک تھیسپینز تھیٹر کے ڈائریکٹر ہیں ۔ اُنھوں نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ یہ ایک عام مشاہدہ ہے کہ جب بھی پاکستان میں حالات خراب ہوتے ہیں تو جو پہلا خیال ذہن میں آتاہے وہ یہ کہ ہمیں ملک چھوڑ دینا چاہیئے۔ میرا سوال ہے کہ ” کیوں “ ۔ کیوں ہم یہ سوچتے ہیں کہ ہمیں یہاں نہیں رہنا چاہیئے۔ اگر ہمارا ملک مسائل اور مشکل حالات سے گزر رہا ہے تو یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم آگے بڑھ کر ان مسائل کو حل کریں۔ اگر نوجوان ہی ملک چھوڑ دیں تو پاکستان کو بچانے کے لیے کچھ نہیں بچے گا۔ پاکستان ہماری شناخت ہے اور ہمیں اپنی شناخت کو دنیا میں مضبوط اور پرامن بنانا ہے۔

وہ کہتے ہیں کہ اس کھیل کو ایسے وقتوں میں پیش کرنے کا مقصد جہاں نوجوانوں میں قومی جذبے کو ابھارنا ہے وہاں سیلاب ، ٹارگٹ کلنگ اور کرپشن جیسے ماحول میں لوگوں کے ذہنی تناوٴ کو تفریح اور مزاح کے ذریعے کم کرنابھی ہے۔ اس لیے ہمارے گروپ کی ذمہ داری ہے کہ وہ لوگوں کے ذہنوں کو مثبت سوچ دیں اور ان کی حوصلہ افزائی کریں۔

وہ کہتے ہیں کہ اس کھیل کو نوجوانوں کی بڑی تعداد نے دیکھا اور ہم سے اسے دوبارہ پیش کرنے کی فرمائش کی گئی ہے۔

XS
SM
MD
LG