رسائی کے لنکس

مفرور کِرغِز صدر استعفیٰ دینے پر تیار


عبوری حکومت تحفظ کی ضمانت فراہم کرنے پر آمادہ مگر اُن کے خاندان کو عدالتی کارروائى سے مامون قرار دینے سے انکاری

کرغِزستان کے مفرور صدر قُرمان بیک باقی یف نے کہا ہے کہ اگر خود کو عبوری حکومت کہنے والی انتظامیہ اُن کےلیے اور اُن کے خاندان کے لیے تحفظ کی ضمانت فراہم کردے تو وہ استعفیٰ دینے کے لیے تیار ہیں۔


مسٹر باقی یف نے اپنے آبائى گاؤں تئیت میں منگل کے روز نامہ نگاروں سے کہا ہے کہ وہ یہ بھی چاہتے ہیں کہ ہنگامے ختم ہوجائیں اور یہ کہ وہ اُس عبوری حکومت کے ساتھ مذاکرات کرنا چاہتے ہیں جس کی سربراہ روزا اَتُن بائے وا ہیں۔
صدر پچھلے ہفتے پولیس اور احتجاجی مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کے بعد دارالحکومت بِشکِیک سے فرار ہوگئے تھے۔ اُن جھڑپوں میں کم سے کم 83 لوگ ہلاک ہوئے تھے۔

اَتُن بائے وا نے خاص ایسو سی ایٹڈ پریس کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر مسٹر باقی یف سُبکدوش ہوجائیں اور ملک سے چلے جائیں تو عبوری حکومت اُنہیں تحفظ کی ضمانت فراہم کرنے پر آمادہ ہوگی۔ تاہم انہوں نے اُن کے خاندان کو عدالتی کارروائى سے مامون قرار دینے سے انکار کردیا۔

کرغزستان کی ایک عدالت نے بِشکیک میں احتجاجی مظاہرین کی ہلاکتوں کے سلسلے میں مسٹر باقی یف کے بھائى اور بیٹے کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کردیے ہیں۔

منگل کے روز اس سے پہلے نئى حکومت میں نفاذِ قانون کے محکمے کے سربراہ نے مفرور صدر سے مطالبہ کیا کہ وہ خود کو دارالحکومت میں حکام کے حوالے کردیں یا پھر خصوصی فوجی دستوں کے ہاتھوں گرفتاری کا سامنا کریں۔

XS
SM
MD
LG