رسائی کے لنکس

لیبیائی باغیوں کےنمائندےجمعےکو ٹام ڈنیلون سے ملاقات کریں گے


لیبیائی باغیوں کےنمائندےجمعےکو ٹام ڈنیلون سے ملاقات کریں گے

لیبیائی باغیوں کےنمائندےجمعےکو ٹام ڈنیلون سے ملاقات کریں گے

’ ہم عبوری قومی کونسل کی طرف سے تشدد اور القاعدہ کی مذمت، اور جمہوری اصلاحات کی پاسداری کے حوالے سے جاری ہونے والے بیانات کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ تاہم، اگر کونسل کو لیبیا کی سرکاری حکومت کے طور پر تسلیم کیے جانے کا سوال ہے، تو میرے خیال میں یہ قبل از وقت ہوگا:‘ ترجمان وائٹ ہاؤس

لیبیا کی عبوری قومی کونسل کےنمائندے جمعےکو وائٹ ہاؤس جا رہے ہیں۔ وائٹ ہاؤس کے لیے’وائس آف امریکہ‘ کے سینئر نامہ نگار ڈین رابنسن نے خبر دی ہے کہ لیبیائی باغیوں کے نمائندے صدراوباما کے قومی سلامتی کے مشیرسےملاقات کریں گے۔

وائٹ ہاؤس نےایک مختصر بیان میں کہا ہے کہ قومی سلامتی کے مشیر ٹام ڈنیلون جمعے کی شام ڈاکٹر محمود جبریل سےملاقات کریں گے، جو لیبیائی عبوری قومی کونسل کے وفد کی سربراہی کررہے ہیں۔

اِس بات کا کوئی عندیا نہیں ملا کہ ملاقات میں صدر براک اوباما بھی شریک ہوں گے۔

کارنی نے کہا کہ امریکہ سمجھتا ہے کہ یہ کونسل لیبیائی عوام کا ایک معتبراورجائز نمائندہ ہے اور لیبیائی لیڈرمعمر قذافی کے خلاف ہے۔

تاہم، ایک رپورٹر کے سوال کے جواب میں اُنھوں نےکہا کہ واشنگٹن سمجھتا ہے کہ کونسل کا تسلیم کیا جانا بہت ہی قبل از وقت ہوگا۔

کارنی نے کہا کہ’ ہم عبوری قومی کونسل کی طرف سے تشدد اورالقاعدہ کی مذمت، اور جمہوری اصلاحات کی پاسداری کے حوالے سے جاری ہونے والے بیانات کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ تاہم، اگر کونسل کو لیبیا کی سرکاری حکومت کے طور پر تسلیم کیے جانے کا سوال ہے، تو میرے خیال میں یہ قبل از وقت ہوگا۔‘

اِس ہفتے برطانیہ لیبیائی اپوزیشن کو لندن میں دفتر کھولنے کی دعوت دے چکا ہے، جس فیصلے کا اعلان وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نےعبوری قومی کونسل کے سربراہ کی طرف سے ملاقات کے بعد کیا۔

دورے پر آیا ہوا لیبیائی باغیوں کا وفد سینیٹ کی خارجہ امورکی کمیٹی کےچیرمین سینیٹرجان کیری سے مل چکا ہے۔

کیری نےکہا ہےکہ وہ ایک قانونی مسودہ تیار کر رہے ہیں جِس کےتحت لیبیائی لیڈرمعمرقذافی کے منجمد اثاثے باغی کونسل کو منتقل کیےجاسکیں گے۔

XS
SM
MD
LG