رسائی کے لنکس

گمشدہ طیارے کا 'راز' معلوم کیا جائے گا: ملائیشیا


ملائیشیا کے وزیراعظم نجیب رزاق کا کہنا تھا کہ اس طیارے میں سوار 239 افراد کے اہل خانہ اس بات کے مستحق ہیں کہ انہیں صورتحال سے زیادہ سے زیادہ آگاہ کیا جائے۔

ملائیشیا کے وزیراعظم نجیب رزاق نے جمعرات کو اس عزم کا اظہار کیا کہ لاپتا مسافر طیارے سے منسلک راز کو معلوم کیا جائے گا۔

یہ بات انہوں نے آسٹریلوی شہر پرتھ میں ایک فوجی اڈے پر عہدیداروں سے ملاقات کے بعد کہی۔

آسٹریلیا کی فضائیہ کے زیر استعمال اس اڈے پر بین الاقوامی ٹیمیں موجود ہیں جو کہ تقریباً ایک ماہ سے ملائیشیا کے لاپتا طیارے کی تلاش کی کوششیں کر رہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس طیارے میں سوار 239 افراد کے اہل خانہ اس بات کے مستحق ہیں کہ انہیں صورتحال سے زیادہ سے زیادہ آگاہ کیا جائے۔

’’دنیا ہم سے توقع کرتی ہے کہ ہم انتہائی حد تک کوشش کریں اور مجھے یقین ہے ہم مختلف قومیں مل کر معمے کے جواب تلاش کر سکتی ہیں اور ان خاندانوں کو سکون فراہم کرسکتے ہیں اور ہم تب تک آرام سے نہیں بیٹھیں گے جب تک اس کی حقیقت نہیں معلوم ہو جاتی۔ مجھے یقین ہے کہ آپ ایسا کرکے دکھائیں گے۔‘‘

بین الاقومی سطح پر ہوائی جہاز اور کشتیاں جنوبی بحرہند میں ملائیشیئن ایئر لائن کے بوئنگ 777 کے ملبے کی تلاش میں مصروف ہیں۔

اپنے ملائیشیا کے ہم منصب کے ساتھ خطاب کرتے ہوئے آسٹریلوی وزیراعظم ٹونی ایبٹ کا کہنا تھا کہ اس کی ضمانت نہیں کہ طیارہ مل جائے لیکن انہوں نے کہا کہ حکام ’’ابھی اس مقام سے کافی دور ہیں‘‘ جہاں تلاش چھوڑ دی جائے۔

’’مجھے یقین ہے کہ اس طیارے کی تلاش کے لیے ہر قدم اٹھایا جائے جو کہ ممکن ہو۔ ہم کامیابی کی یقین دہانی نہیں کروا سکتے لیکن ہم یقین دہانی کروا سکتے ہیں کہ اس ٹاسک کے لیے ہر کوشش کی جائے گی۔‘‘

آسٹریلیا کے حکام نے جمعرات کو جیسے ہی بہتر موسمی صورتحال کی تصدیق کی تو پرتھ سے 17 سو کلومیٹر سمندر میں تلاش کا کام دوبارہ شروع ہوگیا۔

ملائیشیا میں پولیس کے سربراہ نے بدھ کو کہا تھا کہ تفتیش میں یہ بات ظاہر ہوئی ہے کہ 227 سواروں پر کسی قسم کا شک نہیں کیا جارہا تاہم تحقیق کرنے والے اہلکار طیارے کے پائلٹ اور عملے کے اراکین کی تفتیش کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پولیس اغوا، تباہ کاری اور اس طیارے میں سوار افراد کے ذاتی اور ذہنی مسائل کی وجہ سے اس واقعے کے رونما ہونے کے امکانات کا جائزہ لے رہی ہے۔
XS
SM
MD
LG