رسائی کے لنکس

راولپنڈی: کالعدم مذہبی تنظیم کے مقامی رہنما قتل


فائل فوٹو

فائل فوٹو

اہل سنت والجماعت کے کارکنوں نے اپنے رہنما کی نماز جنازہ اسلام آباد کے حساس ترین علاقے "ریڈ زون" میں ادا کرنے کی کوشش کی جہاں ان کی پولیس سے ہاتھا پائی کی اطلاعات بھی موصول ہوئی ہیں۔

پاکستان کے دارالحکومت سے ملحقہ شہر راولپنڈی میں کالعدم مذہبی تنظیم اہل سنت والحماعت کے ایک مقامی رہنما کو نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا جب کہ اس جماعت کے مرکزی صدر کراچی میں ہونے والے قاتلانہ حملے میں بال بال بچ گئے۔

پولیس حکام کے مطابق راولپنڈی میں پیرودھائی موڑ کے علاقے میں اتوار کی صبح نامعلوم مسلح افراد نے تنظیم کے مقامی ترجمان مولانا مظہر صدیقی کو فائرنگ کر کے ہلاک کیا۔

مقتول اپنے ایک ساتھی کے ہمراہ موٹر سائیکل پر جا رہے تھے کہ ان پر یہ جان لیوا حملہ ہوا۔

تاحال اس واقعے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی ہے لیکن پولیس نے شواہد جمع کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔

اس جماعت کے کارکنوں نے اپنے مقتول رہنما کی نماز جنازہ اسلام آباد کے حساس ترین علاقے "ریڈزون" میں ادا کرنے کا اعلان کیا تھا اور جیسے ہی یہ لوگ اس علاقے کی طرف بڑھے تو پولیس نے انھیں روک لیا۔

اس دوران پولیس اور جماعت کے کارکنوں میں ہاتھا پائی کی اطلاعات بھی موصول ہوئی جب کہ پولیس نے لوگوں کو منتشر کرنے کے لیے اشک آور گیس کا استعمال کیا۔

اس سے قبل ہفتہ کو دیر گئے کراچی کے علاقے قائد آباد کے علاقے میں اسی جماعت کے مرکزی صدر علامہ اورنگزیب فاروقی پر قاتلانہ حملہ ہوا لیکن وہ اس میں محفوظ رہے۔

پولیس حکام کے مطابق مولانا فاروقی اپنی گاڑی میں سویڈش کالج کے قریب سے گزر رہے تھے کہ موٹرسائیکل پر سوار نامعلوم مسلح افراد نے ان پر فائرنگ کر دی۔

اہل سنت والجماعت دیو بند مسلک سے تعلق رکھنے والی ایک جماعت ہے جس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ اس سے قبل اس کا نام سپاہ صحابہ تھا۔

اس جماعت پر 2012ء میں پابندی عائد کی گئی تھی۔

XS
SM
MD
LG